وسعتِ قلب و نظر لازم ہے - حبیب الرحمن

یہ ضروری نہیں ہوتا کہ ہم جو بات کہنے سے پہلے اس کے نتائج جس انداز میں دیکھ اور سوچ رہے ہوں، نتائج ہماری سوچ کے مطابق ہی سامنے آئیں۔ خاص طور سے ہر وہ بات جو بہت ہی اہمیت کی حامل ہو، اس کیلئے تو بہت ضروری ہو جاتا ہے کہ اس کے ایک ایک پہلو پر خوب اچھی طرح غور کر لیا جائے اور اس بات کو اچھی طرح سمجھ لیا جائے کہ ردِ عمل کے طور پر جو کچھ سامنے آئے گا اس کے نتائج مثبت آئیں گے یا منفی، لیکن ہوتا یہ ہے کہ کوئی بھی اہم بات کہتے ہوئے ہم اپنے تئیں کچھ خوشگوار نتائج از خود اخذ کر لیتے ہیں اور اس خوش فہمی میں مبتلا ہوجاتے ہیں کہ ہم میدان بالکل اسی طرح مار لیں گے جیسے سوچ لیا ہے۔

وفاقی وزیرِ ہوابازی نے جو رپورٹ قومی اسمبلی میں پیش کی اس کے متعلق شاید موجودہ حکومت اور رپورٹ بنانے والوں کی سوچ یہ رہی ہو کہ پی آئی اے کی فلائٹ پی کے 8303، جو ماڈل کالونی کراچی کی جیتی جاگتی بستی پر جا گری تھی، اس کے گرجانے کی ساری ذمہ داری مرحوم پائلٹ کے سر ڈال کر ہوا بازوں کے اجازت ناموں اور ان کی ڈگریوں کو مشکوک بنادیا جائے تو ہوائی جہاز میں کسی بھی قسم کی فنی خرابی کے جواز کو ختم کرکے پی آئی کے سربراہ سمیت سارے اس عملے کو جو جہاز کی اڑان بھرنے سے قبل، جہاز کی ساری فٹنس کا ذمہ دار ہوتا ہے، نہ صرف ان کو بچا لیا جائے گا بلکہ جعلی پائلٹوں کی بھرتیوں کو بھی ساری سابقہ حکومتوں کے سر ڈال کر موجودہ حکومت کی ڈوبتی اور ڈولتی ساکھ کو بحال کرنے میں کامیابی حاصل ہو جائے گی، الٹی آنتوں کی طرح گلے پڑ گئی۔

ہر تحقیقاتی رپورٹ مرتب ہوجانے کے بعد اس کو پبلک کرنے کا شوق موجودہ حکومت کیلئے مسلسل مشکلات اور ان کی نیک نامی میں اضافہ کرنے کی بجائے بحران در بحران پیدا کرتا چلا جا رہا ہے جس کی وجہ سے ایسا لگتا ہے کہ حکومت کی "آنیاں جانیاں" والی باتوں کی خیر ہو، خود پاکستان کا مستقبل داؤ پر لگا ہوا نظر آنے لگا ہے۔
جس رپورٹ کو پیش کرنے کے بعد وزیر ہوابازی اور اربابِ حکومت کا یہ خیال رہا ہوگا کہ جعلی ڈگری ہولڈرز پائلٹوں کی بھد سابقہ حکومتوں کے سر پر اڑا کر ماڈل کالونی پر گرجانے والے جہاز کا سارا ملبہ اپنے سابقین کے سر تھوپنے کے بعد سارے معاملات پر مٹی پڑ جائے گی، وہ سوچ پاکستان کو اتنی بڑی آزمائش میں میں ڈال گئی جس سے باہر نکلنا ناممکن سا دکھائی دینے لگا ہے۔

پاکستان اپنے وجود میں آنے سے لیکر آج تک بہت بڑے بڑے سانحات سے گزرتا رہا ہے۔ تین چار بڑی جنگیں جھیلی ہیں۔ سقوط مشرقی پاکستان دیکھا ہے۔ اوجڑی کیمپ کی تباہی بھگتی ہے اور بیشمار حادثات و واقعات کا سامنا کیا ہے۔ ان سارے معاملات کی تحقیقات کیلئے کیمیٹیاں بنی ہیں، بڑے بڑے کمیشن ترتیب دیئے گئے ہیں اور ان کی رپورٹیں بھی تیار ہوئی ہیں لیکن ان کو کبھی پبلک نہیں کیا گیا۔ آج قوم کو یہ بات اچھی طرح سمجھ میں آ جانی چاہیے کہ اس قسم کی ہر تحقیق میں ایسے پہلو ضرور ہوتے ہیں جن کو پبلک کرنا قوم و ملک سے غداری کرنے کے برا بر ہوتا ہے۔ ان پرایکشن ضرور لئے جاتے ہیں لیکن رازداری کو بہر صورت ملحوظ رکھا جاتا ہے۔ ہر سچ بیان کرنے اور ہر جھوٹ چھپانے کا نہیں ہوتا۔ آج تک بڑے بڑے سانحات کی رپورٹیں شائع نہ ہونے کے فوائد اگر لوگوں کی سمجھ میں نہیں آ سکے ہوں تو ایک عام سے حادثے کی رپورٹ کو قومی اسمبلی جیسے فورم میں پیش کرنے کے نتائج بھی اب پوری قوم خوب اچھی طرح دیکھ رہی ہے۔

تازہ ترین خبروں کے مطابق تقریباً پوری دنیا نے پاکستان کی ساری پروازوں پر پابندی لگا دی ہے اور دنیا کے بیشمار ممالک نے پاکستانی پائلٹوں کو اپنے اپنے ملک میں گراؤنڈ کردیا ہے۔
تازہ ترین خبروں کے مطابق یورپی یونین نے تو تمام یورپی ممالک میں پاکستانی جہازوں کا داخلہ بند کیا ہی تھا، اقوام متحدہ نے بھی اپنے تمام ذیلی اداروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ کسی بھی پاکستانی کیریئر کو چارٹر نہ کریں۔ اقوام متحدہ کے ڈپارٹمنٹ آف سیفٹی اینڈ سیکوریٹی نے تمام ذیلی اداروں کے نام اپنے ایک مراسلے میں کہا ہے کہ پاکستان میں ہونے والے حالیہ حادثے کی روشنی میں پاکستان میں رجسٹرڈ تمام فضائی کمپنیوں کو اقوام متحدہ کی منظور کردہ فہرست سے نکال دیا گیا ہے۔ یہ خبریں کوئی شادیانے بجانے کیلئے نہیں، حکمرانوں کی محدود عقلوں پر ماتم کرنے کی ہیں۔

کہتے ہیں پوت کی پاؤں پالنے میں نظر آجاتے ہیں۔ اس بات کا اندازہ اس وقت سے ہی ہو گیا تھا جب حکمرانوں کو پاکستان کی ترقی انڈوں، مرغیوں اور کٹوں میں نظر آ رہی تھی۔ علاوہ از ایں، کئی عامیانہ سوچیں سامنے آنے کے بعد یہ بات خوب سمجھ میں آ گئی تھی کہ ملک کن ہاتھوں میں دیدیا گیا ہے۔ تابوت میں آخری کیل سرور اعوان نے ٹھوک کر پاکستان کو پوری دنیا میں جو تماشہ بنایا ہے وہ بہت ہی خوفناک ہے اور کچھ معلوم نہیں کہ اس کے منفی اثرات پاکستان کو کہاں سے کہاں لیجائیں گے۔ ایسے ہی موقع کیلئے شاید کہا گیا تھا کہ

وسعتِ قلب و نظر لازم ہے

دائروں میں نہ سمٹ کر ملنا

اللہ پاکستان کو ہر مشکل اور آزمائش سے باہر نکالے (آمین)

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com