منزل تک رسائی - نازش یعقوب

ہم میں سے ہر کوئی ایک منزل طے کر لیتا ہے کوئی بہت پیسہ چاہتا کوئی بہت شہرت کوئی کسی انسان کی چاہت رکھتا اور کوئی خدا تک جانے کا راستہ ڈھونڈ رہا۔ اب سوال یہ ہے کے منزل تو سب نے سوچ لی مگر کیا وہ منزل مستقل ہے یا عارضی کیا اس منزل تک جانے سے کسی کا نقصاں تو نہیں ۔

کیا میری منزل مجھے میرے ضمیر سے دور تو نہیں لے جائے گی کیا یہ منزل مجھے ابدی فائدہ دے گی یا ازلی ہمیں منزل کے انتحا ب کے وقت راستہ ب چن لینا پڑتا ہے مگر بعض اوقات ہم وہ راستہ پکڑ لیتے جس میں سبکا نقصان مگر ہمارا فائدہ ہوتاکبھی راستہ ہما رے لئے مشکل ہوتا اور منزل ہمیں دور لگتی کیونکہ اس میں ہم دوسروں کا فائدہ سوچتے تو ایسے راستے پے چلنے والوں کے لئے اللہ‎ فرماتا ہے

لا تقنطو من رحمت الله

اللہ‎ کی رحمت سے مایوس نا ہو

ایک اور جگہ فرمایا گیا کے مایوسی کفر ہے

میرا ماننا ہے کے مایوسی ہمیں منزل کے راستے میں رکاوٹ بن جاتی ہےاور ہمیں منزل سے دور کر دیتی ہےبنا کسی کوشش اور ہمت کے ہم منزل تک جا نہیں سکتے۔ کبھی بھی ہمت نا ہاریں اور کوشش کے ساتھ ساتھ منزل تک پہنچانے والی ذات پے یقین رکھنا ضروری ہے ۔یہی ایک طر يقه ہے منزل تک رسائی کا بشر طیکہ اپکی منزل کا انتحاب درست ہو اور اس میں کسی کا نقصان نہ ہو۔

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com