درد کے سمجھنے کو درد ہی ضروری ہے - ایمن طارق

درد کے سمجھنے کو درد ہی ضروری ہے

قید کی اذیت کیا ، خوف کی حقیقت کیا

بھوک کیا مصیبت کیا

برف ہوتے پانی میں

چاند جیسے چہروں کے ڈوبنے کا منظر کیا

تم نہیں سمجھتے تھے

جانتے تو تھے لیکن

خود کو ان مناظر سے دور دور رکھتے تھے ۔

تم نہیں سمجھتے تھے

وقت یوں بھی بدلے گا

خوف کے گھنے بادل زندگی کو ڈھانپیں گے

یہ کھلی فضائیں بھی تم سے روٹھ جائیں گی

خواہشوں کی منہ زوری کو لگام آۓ گی

درد کے سمجھنے کو درد ہی ضروری ہے

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com