کروناخطرات اوراقدامات - راناضیا ء اللہ

کروناوبا سے بچائو کیلئے شروع میں بدانتظامی دیکھی گئی ہے تاہم اب پاک فوج ،رینجرزاورپولیس سمیت ریاستی ادارے اپنااپنامستعد کرداراداکررہے ہیں۔ڈاکٹرز،نرسز اورپیرامیڈیکل سٹاف کاکرداربھی انتہائی قابل قدربلکہ قابل رشک ہے۔

شہرلاہور کے مستعد اورپروفیشنل ڈی سی لاہوردانش افضال،اے ڈی سی آر محمداصغر جوئیہ ، اے ڈی سی جی صفدرحسین ورک، اے سی ہیڈ کوارٹر عاصم سلیم ،اے سی ہیڈکوارٹر ون راناامجدعلی ،اے سی سٹی تبریزصادق مری ، اے سی ماڈل ٹائون ذیشان نصراللہ رانجھا ،اے سی شالیمار مہدی معلوف اوران کے ٹیم ممبرز کی کمٹمنٹ اورخدمات کوبھی سراہاجارہا ہے۔ڈی سی اولاہور دانش افضال انتہائی دانشمندی اوردوراندیشی سے کروناسے وابستہ چیلنجز سے نبردآزماہورہے ہیں۔لاہور میں ضروریات زندگی کی مصنوعی قلت پیداکرنے اور صارفین کی جیب صاف کرنیوالے سماج دشمن عناصر کیخلاف ڈی سی لاہوردانش افضا ل کی قیادت میں ،اے ڈی سی آر محمداصغر جوئیہ ، اے ڈی سی جی صفدرحسین ورک، اے سی ہیڈ کوارٹر عاصم سلیم ،اے سی ہیڈکوارٹر ون راناامجدعلی ،اے سی سٹی تبریزصادق مری ، اے سی ماڈل ٹائون ذیشان نصراللہ رانجھا ،اے سی شالیمار مہدی معلوف اوران کے ٹیم ممبرز نہایت منظم اندازسے آپریشن کررہے ہیں ۔ڈاکٹرز اورنرسز سمیت پیرامیڈیکل سٹاف نے کروناسے منسوب خطرات کی پرواہ نہ کرتے ہوئے متاثرین کی زندگیاں بچانے کابیڑااٹھایا ہے۔

پولیس کی طرف سے ڈاکٹرز،نرسزاورپیرامیڈیکل سٹاف کوان کی گرانقدر خدمات پرسلیوٹ مستحسن اقدام ہے ۔شہیدڈاکٹراورشہیدنرس سمیت متعدد ڈاکٹرزریاست کی طرف سے سول اعزازات کے مستحق ہیں ۔کروناوبا کے دوران ڈاکٹرز ،نرسز اورپیرامیڈیکل سٹاف کی بھرپور مسیحائی کو فراموش نہیں کیا جاسکتا۔پاک فوج ،رینجرز، پولیس اورپٹواریوں سمیت دوسرے انتظامی اداروں نے کوئی کسر نہیں چھوڑی۔پاکستان کے ریاستی ادارے وباکواپنے ملک قدم جمانے کی ہرگزاجازت نہیں دیں گے ۔شروع میںعوام سہولیات کیلئے شورمچارہے تھے تاہم اب انہیں کافی حدتک اطمینان ہے ۔ بروقت اقدامات نہ ہونے سے کرونابحران میں شدت آئی لیکن اب حکمران کافی سنجیدہ ہیں۔عمران خان بحیثیت وزیراعظم اس بحران میں کمزور محسوس ہوئے ۔موصوف اوران کی ٹیم سے کسی بہتری کی امید نہیں کی جاسکتی ۔پی ٹی آئی اورپیپلزپارٹی والے بذات خود بوجھ اوراپنے منفی کردار سے عوام کو پریشان کررہے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان کی تقریرمیں عوام کیلئے کوئی تدبیرنہیں تھی،حساس ایشوپران کی بے سروپاباتیں ایک بڑاسوالیہ نشان ہیں۔اس طرح کے لوگ ملک وقوم کی باگ ڈورنہیں سنبھال سکتے ۔ کروناسے نجات کیلئے بیانات نہیں ٹھوس اوردوررس اقدامات کی ضرورت ہے۔وفاق اورصوبوں کے حکمران پوائنٹ سکورنگ کرنے کی بجائے اپنے اپنے منصب سے انصاف کریں ورنہ اقتدار چھوڑدیں ۔ حکمرانوں کارویہ'' دوسروں کونصیحت خودمیاں فضیحت ''کے مصداق ہے۔حکمرانوں کی سرگرمیاں محض اخبارات تک محدود ہیں ،انہیں عوام کے ساتھ کوئی ہمدردی نہیں۔ ملک وقوم کیلئے نااہل حکومت کروناوائرس سے بڑی نحوست ہے۔حکمران کروناوائرس کیخلاف نام نہاد اقدامات کی آڑ میں قومی وسائل ہڑپ کررہے ہیں۔ حکمرانوں نے کرپشن کانیا راستہ ڈھونڈلیا ہے۔وزیراعظم اوروزرائے اعلیٰ سمیت وفاقی وصوبائی وزراء کوانتظامی وسیاسی تعلیم وتربیت کی اشد ضرورت ہے،کاش آج پنجاب کااقتدار چوہدری پرویزالٰہی کے پاس ہوتاتوپنجاب میں متاثرین کی گنتی نہ ہونے کے برابر ہوتی۔ عوام کروناسے بچائوکیلئے کپتان اوربزدار ہٹائوتحریک کی ضرورت محسوس کررہے ہیں۔

یہ سیاست نہیں انسانیت کی انتھک خدمت کاوقت ہے۔چوہدری شجاعت حسین،چوہدری پرویزالٰہی،چوہدری مونس الٰہی اورراجابشارت کی تقلیدکرتے ہوئے حکومت اورمتحدہ اپوزیشن والے بلیم گیم کے نام پرقیمتی وقت بربادکرنے کی بجائے اپنی توانائیاں پاکستانیوںکومہلک کروناوبا سے بچا نے اور اس کامستقل سدباب کرنے کیلئے صرف کریں۔اس وقت حکمران پارٹی اوراس کی اتحادی پارٹیوں سمیت کوئی جماعت تنہا اس آفت کامقابلہ نہیں کرسکتی ،اس پرقابوپانے کیلئے ایک دوسرے کوبرداشت کرنے اورایک دوسرے کاساتھ دینے کی ضرورت ہے ۔شہریوں کو ڈرکی کیفیت سے باہرنکلناہوگا،کروناقابل شکست ہے۔مناسب اختیاطی تدابیر سے کروناکابھوت بوتل میں بنداورسمندربردکیاجاسکتا ہے۔

حکمرانوں سمیت سیاستدان پاکستان مسلم لیگ (قائداعظمؒ ؒؒ)کی دوراندیش اورزیرک قیادت چوہدری شجاعت حسین،چوہدری پرویزالٰہی،چوہدری مونس الٰہی اورراجابشارت کے نقش قدم پرچلیں اور عوام کامورال بلندکریں ۔جس طرح ہمسایہ ملک چین نے کروناکوشکست فاش دی اس طرح پاکستان بھی اس وباکونابودکردے گا۔پاکستان کے لوگ بہت پرجوش ،پرعزم اورپرامید ہیں ،کرونا وبا پاکستانیوں کومرعوب نہیں کرسکتی تاہم عوام کروناسے بچائوکیلئے بتائی جانیوالی اختیاطی تدابیر پرضرورکاربند رہیں۔ پاکستانیوں کوسیاسی قیادت کے شانہ بشانہ کرونا کیخلاف جاری مزاحمت کوکامیاب بناناہوگا۔سیاسی قیادت نے اپنے ہم وطنوں کی خدمت اورحفاظت کابیڑااٹھایا ہے ، چوہدری شجاعت حسین،چوہدری پرویزالٰہی،چوہدری مونس الٰہی اورراجابشارت اس نازک وقت میں اپنے ہم وطنوں کوتنہا نہیں چھوڑیں گے۔

ہم وطنوں کی انتھک خدمت سے بہترکوئی سیاست نہیں۔اہل اسلام اللہ تعالیٰ کے سواکسی سے نہیں ڈرتے ،کرونا وباسے ڈرنے کی بجائے اس کابھرپورمقابلہ اوراسے نابود کرنے کی ضرورت ہے۔شہری صبرواستقامت اور احتیاطی تدابیر کادامن ہاتھ سے نہ چھوڑیں۔یہ ایک دوسرے کو سیاسی طورپرپچھاڑنے نہیں بلکہ ہاتھوں میں ہاتھ دے کر عوام کوبچانے اور ان کی ویلفیئر کیلئے موثراقدامات اٹھانے کاوقت ہے۔ پاکستان کی سا لمیت اورعوام کی عافیت ہماری سیاست کامحور ہے۔ پنجاب کے سابق وزیراعلیٰ اور1122کے فائونڈر چوہدری پرویزالٰہی کورونا وبا کے سلسلہ میں بھی عوامی خواہشات اورترجیحات کی بھرپورترجمانی کررہے ہیں۔ اہل اسلام اوردوسرے ادیان کے پیروکار کروناسے بچائوکیلئے دوا استعمال کرنے کے ساتھ ساتھ دعاکااہتمام بھی کریں۔ صرف حکومت اورریاستی اداروں پرانحصار نہیں کیا جاسکتا،عوام خود بھی ایک دوسرے کاخیال رکھیں اورمستحق افراد کی خاطرخواہ مددکریں۔

کرونا سے بچائواورمستقل نجات کیلئے ہمیں اختیاطی تدابیر کواپنی اوراپنے پیاروں کی زندگی کاحصہ بناناہوگا۔انسان نے ماضی میں بھی کئی آفات اوروبائوںکوشکست دی ہے ،ان شاء اللہ کرونا بھی عنقریب قصہ پارینہ بن جائے گا۔ پاکستان مسلم (قائداعظم ؒ) کی فرض شناس اورباضمیر قیادت مادروطن کوسماجی وسیاسی برائیوں اورکروناسمیت ہرقسم کی وبائوں سے پاک کرکے دم لے گی ۔ چوہدری شجاعت حسین،چوہدری پرویزالٰہی،چوہدری مونس الٰہی اورراجابشارت کرونا کامقابلہ کرنے کیلئے شہریوں میں شعور بیدار جبکہ ان میں خودداری اورخوداعتمادی بحال کررہے ہیں۔ چوہدری شجاعت حسین،چوہدری پرویزالٰہی،چوہدری مونس الٰہی اورراجابشارت کی ترغیب پرمعاشرے کے ثروت مندافراد مستحق ہم وطنوں کی مددکیلئے اٹھ کھڑے ہوئے ہیں۔

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com