ہم بھی نا- ڈاکٹر طاھرہ

نوع انسانی نہائیت مشکل گھڑی سے گزر رہی ہے ، کوئی بھی جغرافیائی ،لسانی،مذہبی یا سماجی گروہ اس سختی سے آزاد نہیں۔ اس دوران دنیا کے ہر کونے سے نئے نقاط، افکار اور مفروضات کا ایک ڈھیر ہے جو بلند سے بلند ہوتا جا رہا ہے۔حالات تیزی سے پلٹا کھا رہے ہیں۔ اور حالت جنگ کی سی کیفیت طاری ہے۔

ڈاکٹر ہونے کے ناطے بہت سے لوگوں کے سوال ہر وقت موصول ہو رہے ہیں۔ ہر کوئی موقع کی سنگینی کو جانتے ہوئے بھی انجان ہے، اور کثرت ان لوگوں کی ہے جو افواہوں سے متاثر ہیں اور مزید افواہیں پھیلانے کا سبب ہیں۔برائے مہربانی کوشش کیجیے کہ

1۔ زندگی کی گہما گہمیوں میں ہمارا اللہ سے تعلق کمزور ہو جاتا ہے،تجدید کیجیے اس تعلق کی اور ان گنت نعمتوں کے شکرانے کے ساتھ ساتھ دانستہ اور غیر دانستہ غلطیوں پر معافی کے طلبگار ہوں۔

2۔ اہم ترین ۔۔۔۔ہر سنی سنائی بات پر یقین مت کریں اور بلا وجہ بات کو پھیلانے سے احتراز برتیں۔کسی پوسٹ کو بغیر تحقیق آگے بھیجنے سے گریز کریں۔یاد رکھیں فوٹو شاپ اور غلط میڈیکل معلومات پر مبنی اتنی تصاویر دیکھ چکی ہوں ،جن کو لوگ من و عن قبول کر کے غلط فیصلے کر رہے ہیں۔اور اسے پھیلا بھی رہے ہیں۔

3۔ گھر پر رہیں۔ *ضرورت* کا سامان گھر میں رکھیں۔ جب تک مجبورا نکلنا نا پڑے ،سکون سے گھر آرام کریں۔ڈاکٹر بننے پر ہم نے انسانیت کی خدمت کا حلف اٹھایا تھا ،ہم اس کی پاسداری کے لیے آپ سب کے لیے کام کر رہے ہیں۔ورنہ حالات کی نزاکت اور اپنے بچوں کو دیکھ کر ہم بھی گھر میں بند ہونا افضل سمجھتے ہیں۔برائے مہربانی ہسپتال کو تفریح گاہ مت سمجھیں۔

4۔اچھی نیند ،اچھی خوراک ،اور اچھی سوچ وقت کا اہم تقاضہ ہے۔جسمانی اور ذہنی صحت لازم و ملزوم ہیں۔ سو ان دونوں کا خیال رکھیں۔

5۔اس وقت کو فالتو مت سمجھیں۔خود کو،گھر والوں کو اور اپنے گھر کو وقت دیں۔

6۔ کسی بھی چیز کی تصدیق یا تردید کے لیے صرف مستند اور قابل اعتبار ذرائع استعمال کریں۔ صاحب اقتدار ہونے کا مطلب یہ نہیں کہ کوئی شخص صاحب عقل بھی ہو۔

7۔ صدقہ اور خیرات نا صرف مشکلات کو ختم کرتا ہے بلکہ قرب الہی کا ذریعہ بھی ہے۔ سو اپنے اطراف پر نظر ڈالیں اور دوسروں کی مدد کریں۔آخر میں سب سے گزارش ہے کہ اس وقت مثبت سوچ اور مثبت رویے حالات کو پلٹنے میں بہت معاون ہو سکتے ہیں۔رب العزت کی بارگاہ میں دعا ہے کہ۔ اے مقتدر اعلی، ہم خطا کار اور گناہگار ہیں۔ہم آزمائشوں کے قابل نہیں،ہماری کوتاہیوں کو معاف فرما ۔ ہم سے عفو کا معاملہ فرما۔

ہمیں ہدائیت کا رستہ دکھا ، ہمیں ان لوگوں میں شامل فرما جن سے تو راضی ہوا ۔ہمارے اعمال پر نا جا کہ وہ صرف دنیاوی زندگی میں لتھڑے ہیں ، یا رب ،تو رحمان ہے تو رحیم ہے۔ ہم سب پر اپنا فضل اور کرم فرما۔ اور اس آزمائش کو ختم فرما دے ۔آمین۔

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com