سنو عورت مارچ والیو - بینیش خان

اے نادان عورتو! تم کس دھوکے اور فریب میں پڑی ہوئی ہو! کس کو خوش کرنے کے لیے تم اپنے رب کی باغی ہوگئی ہو؟ مرد سے آزادی اور برابری کے چکر میں تم اپنے رب کے احکام کی کھلی خلاف ورزی کر رہی ہو؟

اس سے ہرگز انکار نہیں عورت کے ساتھ بعض اوقات ظلم ہوتا ہے لیکن اس ظلم کے خلاف آواز اٹھانے اور اس کو کو انصاف دلانے کی اڑ میں تم نے حیا اور معاشرتی اقدار کا جنازہ نکالنے جواز کیسے ڈھونڈ لیا!

تمہارا کہنا ہے کہ میرا جسم میری مرضی مانا کہ جسم تمہارا ہے اور کچھ مدت کے لیے تمہیں اس جسم پر مرضی چلانے کی مہلت دے دی گئی ہے لیکن کیا تم ہمیشہ اس کے جسم پر ہمیں اپنی مرضی چلا سکو گی؟ آج تمہارے پاس جوانی ہے صحت ہے اور تم سرخی پاؤڈر لگا کر عجیب و غریب قسم کے نعرے لکھ کر پلے کارڈ اٹھا کر سڑکوں پر نکل رہی ہو لیکن تصور کرو اس وقت کا جب ملک الموت تمہاری روح قبض کرنے آئے گا تو کیا تم اسے کہو گی کہ یہ میرا جسم ہے اور اس پرمیری مرضی چلے گی تم کون ہوتے ہو اس میں سے میری روح نکالنے والے! مرنے کے بعد جب تم قبر میں دفنا دی جاؤ گی اور منکر نکیر تم سے سوال کریں گے ۔

تو اس وقت تم اپنی مرضی چلا سکوگی کیا تم انہیں کہہ سکتی ہو کہ میں تمہیں جواب دینے کی پابند نہیں ہوں ۔جب میدان حشر میں ہر بندہ اپنی جگہ سے پانچ سوالوں کے جواب دیئے بغیر ‏ ہل نہیں سکے گا تمہیں بھی ان سوالات کا سامنا کرنا پڑے گا اور جب تم سے پوچھا جائے گا کہ تم نے اپنی زندگی کس کام میں گزاری تو یہ کہو گی میں نے اپنی زندگی عورت کو اس کی ذمہ داریوں سے آزادی دلوانے اور فطری اور شرعی قوانین سے بغض میں گزاری میں نے اپنا وقت اور اپنی توانائیاں عورت کو مرد کے مد مقابل کھڑا کرنے میں لگائیں۔

اے نادانو! تم سب مسلمان گھرانوں سے تعلق رکھتی ہو اور کلمہ گو مسلمان ہو تمہارے پاس یہ جسم اللہ کی امانت ہے اور اس پر تمہارا اختیار اور تمہاری مرضی بہت ہی تھوڑے وقت کی لئے ہے تم دارل امتحان میں ہو تمہیں یہاں کیے گی ہر عمل کی لیے آخرت میں جواب دے ہونا پڑے گا تم جس تہذیب کی دلدادہ ہوں انکی پاس اسلام جیسی عظیم نعمت نہیں ہے ان کے پاس قرآن کی رہنمائی موجود نہیں ہے تم ان کی دنیاوی ترقی اور ظاہری چکاچوند دیکھ کر متاثر ہو گئی ہوں اور ان جیسی مادر پدر آزادی مسلم معاشرے میں رائج کرنا چاہتی ہو۔

یہ مغربی آزادی اور چکاچوند بہت ہی تھوڑے وقت کے لئے ہے اللہ تعالی سورۃ آل عمران میں فرماتا ہے (تجھے کافروں کا شہروں میں چلنا پھرنا دھوکے میں نہ ڈال دیں یہ تو بہت ہی تھوڑا فائدہ ہے اس کے بعد ان کا ٹھکانہ تو جہنم ہے اور وہ بری جگہ ہے)

تم جس فہاشی اور بے حیائی کا پرچار کر رہی ہو اور دوسری لڑکیوں کو بھی اس کی طرف راغب کر رہی ہو اس کی بارے میں قرآن میں جو وعید آئی ہے وہ بھی سن لو۔. سورہ نور میں آتا ہے( جو لوگ مسلمانوں میں بے حیائی پھیلانے کے آرزومند رہتے ہیں ان کے لیے دنیا اور آخرت میں دردناک عذاب ہے) ۔

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com