کورونا وائرس، خدا کا خوف کریں- محمد مشتاق

اتنے سارے ٹوٹکے، اتنی ساری تدابیر، اتنے سارے وسوسے!سوشل میڈیا، پرنٹ میڈیا اور الیکٹرانک میڈیا نے ایک خوف و ہراس کی فضا بنادی ہے اور ہر کوئی - حسب توفیق - اس میں کردار ادا کررہا ہے۔

احتیاطی تدابیر ضروری ہیں لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ احتیاطی تدابیر کے نام پر جو کچھ آپ فارورڈ کررہے ہیں، وہ واقعی احتیاطی تدابیر ہی ہیں؟ نیز کیا آپ نے سوچا ہے کہ اس طرح آپ لوگوں کو حواس باختہ تو نہیں کررہے؟ ہر کوئی فکر میں کہ ماسک کہاں سے ڈھونڈے، ہاتھ دھونے کےلیے کیا کرے، کھانسی ہو تو کہاں جائے، دھات کو چھو لیا تو کیا کرے، وغیرہ۔ مجھے تو سمجھ میں آیا ہے وہ یہ ہے کہ جو احتیاطی تدابیر گردش میں ہیں ان پر ہر بندے نے عمل شروع کرلیا تو گلیاں سنسان ہوجائیں گی اور کاروبارِ زندگی معطل ہو کر رہے جائے گا۔

اس پر تماشا یہ ہے کہ ہر احتیاطی تدبیر کے سٹکر کے شروع یا آخر میں لکھا ہوتا ہے کہ یہ بس احتیاط ہی ہے اور علاج کوئی نہیں ہے، وغیرہ۔ویسے کبھی آپ نے سوچا ہے کہ روزانہ ٹریفک حادثات میں پاکستان میں کتنی اموات ہوتی ہیں؟ تو کیا ساری ٹریفک بند کردیں؟میں ہر گز یہ نہیں کہہ رہا کہ کوئی احتیاطی تدبیر نہ کریں اور بس ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھے رہیں، لیکن یہ کیا کہ اس چیز کو اعصاب پر طاری کرلیا جائے اور بندہ بالکل ہی باؤلا ہوجائے۔

موت کا ایک دن معیّن ہے

نیند کیوں رات بھر نہیں آتی!

تمام احتیاطی تدابیر کا خلاصہ یہ ہے کہ صاف ستھری زندگی بسر کریں۔ صفائی کا خیال رکھیں۔ حفظانِ صحت کے اصولوں کی پابندی کریں۔ ہاتھ دھویا کریں، ہوٹلوں کا کھانا کم کھایا کریں، سبزیوں اور فروٹس کی طرف توجہ زیادہ دیں۔ہاتھ دھونے سے یاد آیا۔ کیا کسی کو یہ کہنے سے کہ دن میں کم از کم پانچ دفعہ تو ناک اور منہ صاف کیا کریں اور چہرہ، ہاتھ اور پیر دھولیا کریں، یا بہ الفاظ دیگر وضو کیا کریں، تو آدمی کچھ مولوی مولوی سا لگنے لگتا ہے؟ اور اگر اس کے بجاے اسے صرف ڈبلیو ایچ او یا این آئی ایچ کی ہدایات پڑھ کر سنائیں تو آدمی کچھ سویلائزڈ سویلائزڈ سا لگنے لگتا ہے؟

یہ بھی پڑھیں:   کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے ایران کا بڑا فیصلہ، ریلیف پیکج کا اعلان کردیا

آخری بات یہ ہے کہ موت بہرحال آنی ہے، کسی بھی وقت آسکتی ہے، وبا کے بغیر بھی آسکتی ہے، اور وبا کی موجودگی میں بھی اللہ چاہے تو آپ محفوظ رہ پائیں گے۔ زندگی کی حفاظت لازمی ہے لیکن بھروسا اللہ پر رکھیں، خوف بھی اللہ کا ہی رکھیں، زندگی ساری آزمائش ہے، صحت بھی، بیماری بھی، وبا بھی۔اللہ سب کو محفوظ رکھے اور حسنِ خاتمہ نصیب کرے۔