ایک تاریخ - محمد شاکر

یہ صرف ایک مجسمہ نہیں بلکہ اپنی شہہ رگ کو بچانے کی عجب تاریخ ہے , اس مجسمے میں ایک عثمانی ترک فوجی ایک زخمی برطانوی فوج کو اٹھائے ہوئے ہیں جو اس بات کا اعلان ہے کہ وہ اپنی شہہ رگ کو بچا چکے ہیں .یہ مجسمہ گیلی پولی نیشنل پارک میں نصب ہے , تقریبن سو سال پہلے اسی فروری کے مہینے میں اتحادی افواج (برطانیہ , روس , فرانس , نیوزیلینڈ اور آسٹریلیا ) نے ترکی کے علاقے گیلی پولی پر شدید حملہ کیا .

اس حملے کا مقصد یہ تھا کہ چند ماہ کے اندر وہ گیلی پولی پر قبضہ کرکے پھر عثمانی دارالحکومت قسطنطینہ ( استنبول ) پر حملہ کرینگے کیونکہ گیلی پولی سے استنبول اتنا دور نہیں تھا ,
اس گیلی پولی کے میدان میں ترکوں نے وہ قربانیاں پیش کی جو تاریخ بہت کم ملتی ہے , ترکوں کی آدھی فوج تقریبن ستاسی ہزار فوجی اپنی شہہ رگ کو بچانے کے لئے اسی میدان میں شہید ہوئی , ایک لاکھ سے زائد اتحادیوں کو مات کر اور زخمی کرکے یہاں سے بھاگنے پر مجبور کیا گیا __اپنی شہہ رگ کو بچانے کے لئے قوموں کو بڑی قربانیاں دینی پڑتی ہے , حملہ ترکانہ کے بغیر شہہ رگ کو کبھی بھی نہیں بچایا جا سکتا , جلسے جلوس اور نام نہاد یکجہتیاں صرف کمزوری کی علامت ہے
#م_ش