اس دور کی زلیخا کو ہے پھر یوسف کی تلاش -.اسریٰ غوری

یہاں ایک حریم شاہ نہیں... یہ معاشرہ بھراہوا ہےحریم شاہوں سے....کچھ سامنے آجاتی ہیں اور کچھ نقابوں میں رہ کر یہی کام کرتی...
مگر یاد رکھیے..! کہ فضہ حسین سے حریم شاہ تک کے سفر میں جو اصل کردار ہے وہ مرد کا ہے......مت بھولیں کہ... زلیخا تو ہر دور میں ہوتی ہے... کبھی اسکی آنکھوں پر وقتی محبت کی پٹی بندھی ہوتی ہے ... تو کبھی مال اور دولت کی ہوس اتنی بڑھ جاتی ہے ... کہ وہ اپنے خاندان کی عزت روندھنے سے بھی نہیں چوکتی ... یہ نادان ہوتی ہے جلد بہکاوے میں آجاتی ہے . خدارا اس کی نادانیوں‌سے مت کھیلیں ....

اسے اسکی نادانیوں اور اس گمراہی سے بچانے والا اور راہ پر واپس جانے پر اپنی غلطی ماننے پر مجبور کرنے والا..... دراصل اک باکردار یوسف ہی ہوتا ہے........
خدارا اس قوم کی بیٹیوں کے لیے یوسف بنیں... شیخ رشید اور اس کے قبیلے کے دیگر نا بنیں .... ایسا نہ ہو کہ کل آپ کی فضہ حسین کو کوئی حریم شاہ بنارہا ہو.........
حریم شاہ کے والد کی ویڈیو. باخدا ہمت نہیں کہ بوڑھے جھریوں سے بھرے چہرے ، سسکتے اور لرزتے ہونٹوں ، اور سرخ آنکھوں سے بہتے اشکوں کی بے بسی ، اور وہ ٹوٹے الفاظ شییر کرسکوں ... جب وہ کہتا میں نے تو کبھی کسی کا دل بھی نہیں دکھایا..... پھر کس کی بددعا لگ گئی ہے ، اے اللہ میرا کوئی گناہ ہے تو اسکو معاف کردے.. اور وہ رب سے رو رو کر یہ التجا کرتا ہے کہ اسکی بیٹی کو واپس فضہ حسین بنا دے ... حریم شاہ کے باپ کے آنسوؤں میں تر چہرے میں چھپے کرب کو محسوس کیجیے اور خود کو اسکی جگہ رکھ کر سوچئے.... خدا نہ کرے کہ کل اسکی جگہ آپ ہوں..
جو کرچکے اس پر.... توبہ کیجیے اللہ کے حضور اور ان زلیخاؤں کو بچا لیجیے....تاکہ آپکے گھر کی زلیخا بھی بچ سکے.....

Comments

اسری غوری

اسری غوری

اسری غوری معروف بلاگر اور سوشل میڈیا ایکٹوسٹ ہیں، نوک قلم بلاگ کی مدیرہ ہیں، حرمین کی زیارت ترجیح اول ہے، اسلام اور مسلمانوں کا درد رکھتی ہیں اور اپنی تحاریر کے ذریعے ترجمانی کرتی ہیں

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

  • مرد ۔۔ہی وہ اصل منصوبہ ساز ہے جب پاور میں آتا ھے عورت کو پاور دینے کے لالچ میں استمعال کر جاتا ھے ۔ اسلام اسی لئےعورت کو گھر سے نکلنے سے منع کرتا ھے