شکست یتیم ہوتی ہے، کامیابی کے ہزار باب پیداہو جاتے ہیں - حسین اصغر

جس دن پاکستانی قوم نے خالی خولی تقریروں کی جگہ عمل کو دیکھ کر لیڈر شپ کا انتخاب کیا پاکستان کے تمام مسائل حل ہوجائیں گے مجھے صرف تقریر کا وہ حصہ دیکھادیں کہ جس میں اصل ایشو کشمیر پر کیا بات ہوئی ہے !کیا اقوام عالمُ میں U.N اسمبلی میں عالمی تقریر مقابلہ تھا تو پھر عمران تو نمبر ون ہے ۔

لوگ بتارہے ہیں کہ دنیا تعریف کر رہی ہے تو بھائی کون سی دنیا وہ دنیا جو پاکستان کے ٹکڑے ٹکڑے کرنا چاہتی ہے وہ تعریفیں کیون نہ کرے جو کام بہت آسانی سے انجام پزیر ہو رہا ہو اس کے لئے انہیں کچھ کرنے کی کیا ضرورت “ہمارا یہ حال رہا تو ترقی یافتہ کیا ترقی پزیر بھی نہیں رہیں گے “پاکستانی حکمرانوں کا وطیرا ہے ہمیشہ اصل ایشو کو نظر انداز کر کے عوام کو لولی پاپ تھما دیتے ہیں۔

پاکستانی حکمران بھی بڑے شاطر ہیں

جن کو شلوار قمیض کی ضرورت تھی انکو وہ تھما دیا

جن کو تسبیح کی ضرورت تھی انکے ہاتھ میں تسبیح پکڑا دیا

جن کو انگریزی انگریزی کھینا تھی ان کو اس سے مسرور کر دیا

اور جن کو جدید دور کے ٹی وی چینل کی ضرورت ہے ان کو وہ تھما دیا

مگر یہ نہیں بتایا کہ کشمیر کا کیا ہوگا وہ ۴۵ ممالک کہاں ہیں جن کی مدد سے انڈیا کو مجبور کرنا تھا کہ کشمیر کی پرانی حیثیت بحال کی جائے اور کشمیر اٹھایا جائے جس سعودیہ سے حمایت لینے گئے تھے انہوں نے انکے ساتھ بھی انکے والا حال کیا ان کو جہاز تھما دیا اور حمایت انڈیا کی کردی ساری باتوں کے درمیان اصل ایشو “کشمیر “ پر عملی طور پر کیا ہوا ۔انڈیا کے Article 370 کا حکومت پاکستان نے کیا کرنا ہے ؟اس پر کوئی بات ہوئی ؟کیا جس طرح کشمیر میں انڈیا نے اپنی من مانی کرتے ہوئے Article 370 ختم کر دیا ہے اس طرح پاکستان بھی اپنی فوج آزاد کشمیر میں بھیج رہا ہے ؟کرفیو کے اندر مرتے انسانوں کا کیا بنا ہے ؟ کتنے ممالک نے ہماری حمایت کی ہے ۔

یہ بھی پڑھیں:   اردگان ! زبیر منصوری

اب آتے ہیں اصل کی طرف کچھ دن پہلے امریکہ کے دورے کے دوران عاسیہ کو رہا کرنے کا عمران نے خود امریکی میڈیا کے سامنے اطراف کیا آج ضرورت پڑھی تو عاشق رسول کا ڈرامہ رچایا دیا
اس ہی U.N اسمبلی کے خطاب سے ایک دن پہلے عمران نے پریس کانفرنس میں یہ کہہ کر دنیا کو مطمعین کردیا کہ انڈیا کی خلاف کسی فوجی کاروائی کا کوئی ارادہ نہیں اور آج اسٹیج پر ڈرامہ رچادیا ۔تقریر میں کہا گیا کہ اگر انڈیا نے حملہ کیا تو ہم یہ کردیں گے وہ کردیں گے لیکن کوئی یہ نہیں بتا رہا کہ انڈیا نے کب کہا ہے کہ پاکستان پر ہم حملہ کر نے والے ہیں مودی نے جو کرنا تھا وہ کردیا یعنی کشمیر پر قبضہ ہمیں تو یہ سنا تھا کہ اب ہمارا کیا اقدام ہوگا کشمیر پر مگر یہ سارا معاملہ جزباتی تقریر کی نظر ہوگیا ۔

مختصر یہ کہ کشمیر اب پاکستان کا حصہ نہیں رہا جس قوم کو اپنا ملک دو حصوں میں توڑوا کر عقل نہیں آئی وہ خاک اب سمجھے گی “ پاکستان ایک بار پھر ہار گیا “ہاں عمران خان جیت گیا ویسے ہی جیسے بھٹو سے نواز تک سب جیت گئے تھے ۔مگر پاکستان ہار گیا تھا ۔کسی ساتھی نے صحیح کہا تھا کہ بھٹو نے اچھی تقریر کی ۔ قرارداد پھاڑ کر پولینڈ کے منہ پر دے ماری. اور ملک توڑ دیا۔لیکن پاکستان میں بھٹو جیت گیا تھا مگر پاکستان ہار گیا بے ۔نظیر بھٹو نے خوبصورت تقریر کی خالصتان کے سکھوں کے خفیہ لسٹیں انڈیا چلی گئیں۔ اور جرنیل سنگھ بھنڈرانوالہ سمیت سب مرگئے۔

پاکستان میں بے نظیر جیت کئی تھی مگر پاکستان ہار گیا ۔نوازشریف نے برہان وانی کو خراج تحسین پیش کیا اور مجاہدین کے سارے راستے بند ہوگئے۔کشمیری ہندو کے رحم وکرم پر ہیں۔
پاکستان میں نواز شریف جیت گیا مگر پاکستان ہار گیا ۔اور آج پھر عمران نے بہت اچھی تقریر کی ہے اور اب کشمیر مودی کے رحم و کرم پر ہے ۔پاکستان میں عمران جیت گیا مگر پاکستان ہار گیا ۔