میں نے جان اللہ کو دینی ہے - طارق حبیب

انسان کی ترقی کے ساتھ ساتھ اخلاقیات قبر میں اترتی جارہی ہیں۔ مذہب سے محبت کرنے والی پاکستانی عوام کو بے و قوف بنانے کا آسان ترین طریقہ یہ ہے کہ ہر جھوٹ میں اللہ کا نام لے لو (معاذ اللہ)۔۔۔۔ توعوام فوری طور پر یقین کرلیتے ہیں کہ یہ شخص اللہ کا نام لے رہا ہے تو جھوٹ تو نہیں بول رہا ہوگا۔

اسی سادگی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے سب نے اللہ تعالیٰ کا نام صرف اپنی بات میں وزن پیدا کرنے کے لیے لینا شروع کردیا ہے۔ ۔ اداکارہ میرا کہتی ہے کہ ’’ان شاء اللہ‘‘ میری فلم باجی کامیاب ہوجائے گی
۔ نیلم کہتی ہے کہ فوج کی محبت میں کیے جانے والے گانے کو اللہ نے کامیابی دی ہے۔ ۔ وینا ملک کہتی ہے کہ بھارت میں میری شہرت اللہ تعالیٰ کی دین ہے۔ کچھ ایسا ہی حال سیاستدانوں کا بھی ہے۔ ’’ایاک نعبد و ایاک نستعین‘‘ سے اپنے ہر خطاب کا آغاز کرنے والےوزیر اعظم ہوں یا ان کی کابینہ۔ مذہب کو کرسی بچانے کا ذریعہ سمجھ لیا گیا ہے۔ اسی طرح ’’میں نے جان اللہ کو دینی ہے‘‘ کو بنیاد بنا کر مسلسل رانا ثناء اللہ کی ویڈیو۔ بطور ثبوت مختلف اداروں کو بھیجنے کے دعوے کرنے والے وفاقی وزیر داخلہ شہریار آفریدی کے جھوٹ کو بھانڈہ اینٹی نارکوٹک فورس کے سربراہ نے یہ بیان دے کر پھوڑ دیا کہ رانا ثناء اللہ کی کوئی ویڈیو موجود نہیں ہے۔ مگر آپ یقین کریں کہ اور جائزہ بھی لیجئے گا کہ اگر اس جھوٹ پر اسے معمولی سی بھی شرمندگی ہو۔ سانحہ ساہیوال، صلاح الدین، اوکاڑہ بچوں سے زیادتی، لاپتہ نوجوان۔

یہ سب اسی ایک سال میں بدستور جاری ہیں۔ انھوں نے جان تو اللہ کو دینی ہے مگر شاید یہ جملہ بس اب ان کا تکیہ کلام بن گیا ہے۔ اس ایک جملہ کا بھار اٹھا کر پتا نہیں انھیں راتوں کو نیند کیسے آجاتی ہے۔

Comments

طارق حبیب

طارق حبیب

طارق حبیب آج نیوز میں سینئر پروڈیوسر کرنٹ افیئرز ہیں۔ مختلف قومی اور بین الاقوامی اداروں کے ساتھ بطور تحقیقاتی رپورٹر کام کیا ہے۔ دلیل کے مستقل لکھاری ہیں

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.