کالج انتظامیہ کا نقل روکنے کے لیے انوکھا اقدام، طلبہ پریشان

نئی دہلی : بھارت میں کالج انتظامیہ نے طلبہ کو امتحان کے دوران نقل سے روکنے کے لیے سر پر کارڈ بورڈ باکس پہنادئیے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست کرناٹک کی بھگٹ پری یونیورسٹی کالج کی انتظامیہ نے امتحانات کے دوران طلبہ کو چیٹنگ سے روکنے کےلیے ایسا نوکھا طریقہ نکالا کے طلبہ چاہ کر بھی نقل نہیں کرسکتے۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ انتظامیہ نے دوران امتحان طلبہ کے سروں پر گتے کے ڈبے پہنا دئیے۔

میڈیا اداروں کے سوال پر کالج انتظامیہ نے مؤقف اختیار کیا کہ بڑی تعداد میں چیٹنگ کی شکایات موصول ہورہی تھیں کس کے بعد ہم نے یہ اقدام اٹھایا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق سر پر گتے کے باکسز پہنے طلبہ کی تصویر آن لائن وائرل بھی وائرل ہوئی ہیں۔

غیرملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ طلبہ مڈٹرم امتحانات کے دوران کیمسٹری اور فزکس کا پرچہ دے رہے تھے جب اساتذہ نے انہیں گتے کے ڈبے پہنائے۔

کرناٹک کے وزیر تعلیم سریش کمار نے طلبہ کو گتے کے ڈبے پہنانے پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اساتذہ کا یہ عمل کسی صورت قابل قبول نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کسی کو بھی یہ اختیار نہیں ہے کہ طالب علموں کے ساتھ جانوروں کی طرح برتاؤ کریں۔

خیال رہے کہ نقل کی روک تھام کی یہ پہلی منفرد تکنیک نہیں ہے، اس سے قبل 2013 میں تھائی لینڈ میں ایسا ہی تنازع سامنے آیا تھا جہاں طلبہ کو کاغذ سے بنے انسداد نقل ہیلمٹس پہننے پر مجبور کیا گیا تھا۔