نئے خطیبِ حرم مکی شیخ عواد: ضیاء چترالی

فضیلة الشیخ عبد اللہ بن عواد الجہنی مسجد حرام کے سب سے نواجوان امام ہیں۔ آج شاہی فرمان میں انہیں امامت سے ترقی دیکر خطیب کے عہدے پر فائز کیا گیا۔ ان کا شمار بھی عالم اسلام کے مشہور قرائے کرام میں ہوتا ہے۔ انٹرنیٹ میں جن قرا کی تلاوت سب سے زیادہ سنی جاتی ہے، ان میں شیخ عواد الجہنی بھی ہیں۔

شیخ الجہنی نے ایک مرتبہ مسجد حرام میں فجر کی نماز ایسے پرسوز انداز میں پڑھائی، جسے شیخ کی سب سے بہترین تلاوت شمار کیا جاتا ہے۔ اس کی ویڈیو صرف یوٹیوب میں ساڑھے 15 ملین سے زائد بار دیکھی جا چکی ہے۔ انتہائی محدود مدت میں حق تعالیٰ نے شیخ جہنی کو عالمگیر شہرت سے نوازا ہے۔ پہلے وہ مسجد نبوی کے امام تھے، اب مسجد حرام میں امامت کے فرائض سرانجام دے رہے ہیں۔ رواں رمضان المبارک کے دوران بھی شیخ جہنی حرم شریف میں تروایح کی نمازیں پڑھاتے اور سامعین کے کانوں میں رس گھولتے رہے۔ شیخ جہنی کو حق تعالیٰ نے انتہائی خوبصورت و سحر انگیز آواز کے ساتھ دلوں کو موہ لینے والے لہجے سے نوازا ہے۔ اس لئے انہیں ”بلبلِ حرم“ کہا جانے لگا ہے۔ پہلے شیخ علی جابرؒ اس لقب سے پکارے جاتے تھے۔ ان کی تلاوت سن کر سامعین پر رقت طاری ہو جاتی ہے۔ شیخ عبد اللہ الجہنی کی پیدائش بروز منگل11 شوال 1396 ہجری مطابق 13 جنوری 1976ءکو مدینہ منورہ میں ہوئی۔ شیخ جہنی نے بچپن ہی میں اپنے والد کی نگرانی میں حفظ قرآن مکمل کرلیا تھا اور 16 برس کی عمر میں مکہ مکرمہ میں منعقدہ عالمی مسابقہ حفظ قرآن کریم میں اول درجہ سے کامیاب ہوئے تھے۔

یہ ان کی مکہ مکرمہ میں پہلی آمد تھی۔ اس کے بعد مسجد حرام کی امامت کے مرتبے پر فائز ہوکر حرم شریف آئے۔ شیخ موصوف نے سیکنڈری کی تعلیم کے بعد جامعہ اسلامیہ مدینہ منورہ (مدینہ یونیورسٹی) کے قرآن فیکلٹی سے بی اے کی تعلیم حاصل کی۔ تعلیم سے فراغت کے بعد مدینہ منورہ کے ٹیچر کالج میں معید کی حیثیت سے مقرر ہوئے۔ اس کے بعد شیخ جہنی نے مکہ مکرمہ میں ام القری یونیورسٹی سے ایم اے کی تکمیل کی اور بعدازاں ام القری یونیورسٹی میں ہی پی ایچ ڈی کے کورس میں داخلہ لیا۔ ابھی تک ان کا یہ کورس مکمل نہیں ہوا ہے۔ شیخ الجہنی نے 21 برس کی عمر میں مسجد قبلتین سے امامت کا آغاز کیا، مسجد قبلتین کے بعد مسجد نبویؐ میں دو برس منصب امامت پر فائز رہے۔ اس کے بعد چار برس تک مسجد قبا میں امامت کے فرائض انجام دیئے۔ ماہ رمضان 1426ھ میں شیخ الجہنی کے نام مسجد حرام میں نماز تراویح کی امامت کا شاہی فرمان جاری ہوا۔ شیخ الجہنی کو عالمی سطح پر مشہور قرائے کرام سے اجازت حاصل ہے، جن میں شیخ زیاتؒ، مسجد نبوی میں شیخ القراء شیخ ابراہیم الاخضرؒ، امام مسجد نبوی ڈاکٹر علی الحذیفی مدظلہ شامل ہیں۔

ٹیگز