گاڑی ڈرائیو کرنے کی چند احتیاط - بشارت حمید

گاڑی ڈرائیو کرنا ایک فن ہے اسے سیکھنا پڑتا ہے پریکٹس کرنی پڑتی ہے تب جا کے بندہ اس قابل ہوتا ہے کہ گاڑی سڑک پر چلا سکے۔ جب ہم سڑک پر نکلتے ہیں تو گاڑی میں لگے بیک ویو مرر اور سائیڈ مررز ہمیں پیچھے اور سائیڈ سے آنے والی ٹریفک کو دیکھنے میں مدد دیتے ہیں اگر یہ مرر نہ ہوں تو سڑک پر گاڑی چلانا نہ صرف ڈرائیور کے لئے بلکہ دوسرے لوگوں کے لئے بھی کسی حادثے کے شدید خطرے کا باعث بن سکتا ہے۔

جب سے ڈرائیونگ سیکھی ہے تب سے عادت ہے کہ ہر چند سیکنڈ بعد ان مررز اور گاڑی کے ڈیش بورڈ وارننگ لائٹس پر لازمی نظر رکھنی ہے کہ کہیں کوئی پیچھے سے غلط نہ آ رہا ہو اور ڈیش بورڈ میں کوئی وارننگ لائٹ نہ آن ہو۔ الحمدللہ جن احباب نے میرے ساتھ سفر کیا ہے وہ میرے ڈرائیونگ سٹائل سے حد درجہ مطمئن ہی نظر آئے ہیں۔ ڈرائیونگ سے متعلق رہنمائی کے لئے ماضی میں پوسٹ آفس سے ایک کتابچہ مل جایا کرتا تھا (اب نہیں معلوم کہ ملتا ہے یا نہیں) جس میں روڈ سائنز کی تفصیل کے ساتھ ساتھ بہت ہی مفید ہدایات لکھی ہوتی تھیں۔ اور یہ کتابچہ گاڑی میں رکھنا لازمی ہوا کرتا تھا ورنہ چالان بھی کیا جا سکتا تھا۔ اب تو صورتحال ہر محکمے کے زوال کی طرح اس شعبے میں بھی شدید زوال پذیر ہی ہے اسی لئے سڑکوں پر ٹریفک ایک بے ہنگم ہجوم بنتی جا رہی ہے۔ سب سے پہلی گاڑی سوزوکی مہران خریدی تھی۔ اسی پر ڈرائیونگ سیکھی۔ ورکشاپ میں اس کے کام کروا کروا کے گاڑی کے میکنزم کے بارے علم ہونا شروع ہوا۔ ڈھائی تین سال یہ گاڑی زیر استعمال رہی لیکن ایک خاص بات جس کا تذکرہ کرنا چاہوں گا کہ کبھی بھی گاڑی کے سائیڈ مررز اندر کو موڑ کر ڈرائیو نہیں کی۔ اکثر دوستوں نے دیکھا ہو گا کہ سڑک پر جانے والی مہران گاڑیوں میں 90 فیصد گاڑیوں کے سائیڈ مررز اندر کو موڑ کر بند کئے لوگ ٹریفک میں دندناتے پھرتے ہیں۔ کئی بار لوگوں سے دریافت کیا کہ آخر یہ مرر کھول کر گاڑی کیوں نہیں چلاتے تو جواب ملا کہ اگر یہ کھلے ہوں تو رش میں کسی کی سائیڈ لگ کر ٹوٹ جاتے ہیں۔ اللہ کے بندو۔۔۔ یہ شیشے آپکی اپنی حفاظت کیلئے ہیں۔

رش میں باقی گاڑی تو سلامت رہتی ہے بس یہ شیشے ہی ٹوٹتے ہیں؟ کرولا ہنڈا اور دیگر گاڑیوں کے تو ٹوٹتے نہیں سنا مہران کے ہی کیوں ٹوٹیں گے بھلا۔۔ اگر آپ کوئی بھی گاڑی ڈرائیو کر رہے ہیں تو آپکے علم میں ہو گا کہ کوئی نہ کوئی ایسی جگہ ضرور ہوتی ہے جو ڈرائیور کیلئے بلائنڈ سپاٹ بنی رہتی ہے اور اس ایریا میں آنے والی کوئی بھی چیز ڈرائیونگ سیٹ سے نظر نہیں آتی۔ تو اگر ہم سائیڈ مررز بھی بند کر لیں گے تو ہمارے لئے بلائنڈ سپاٹ ایریا مزید بڑھ جائے گا اور کسی بھی ناگہانی حادثے کا خطرہ زیادہ ہو جائے گا۔ ٹریفک قوانین ہماری اپنی حفاظت کیلئے بنائے جاتے ہیں لیکن ہم نے اجتماعی طور پر تہیہ کر رکھا ہے کہ ہم کسی قانون یا ضابطے کو تب تک نہیں مانیں گے جب تک حکومت ڈنڈا لے کر سر پر نہ کھڑی ہو۔ اور بعض دوست تو جرمانے چالان کی بھی پرواہ نہیں کرتے وہ چالان کروا کے بھی ٹریفک قوانین کی ڈٹ کر خلاف ورزی کرتے ہیں اور اپنی انا کو تسکین پہنچاتے ہیں چاہے انکی وجہ سے دوسروں کی جان خطرے میں پڑی رہے۔ ہمارے ایک کولیگ تھے وہ جب بھی ویک اینڈ پر اپنے گھر روانہ ہوتے تو موٹر وے پر اوور سپیڈنگ کا چالان ضرور کرواتے لیکن پھر بھی سپیڈ کم نہ کرتے۔ اپنے آپ کو قانون سے ماورا نہیں سمجھنا چاہیئے اگر آپ کسی سے لڑ کر خودکشی کرنے سڑک پر نکل آئے ہیں تو دوسروں کو معاف رکھئے اور انکو ناکردہ جرم کی سزا مت دیجئے .

Comments

بشارت حمید

بشارت حمید

بشارت حمید کا تعلق فیصل آباد سے ہے. بزنس ایڈمنسٹریشن میں ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی . 11 سال سے زائد عرصہ ٹیلی کام شعبے سے منسلک رہے. روزمرہ زندگی کے موضوعات پر دینی فکر کے تحت تحریر کے ذریعے مثبت سوچ پیدا کرنے کی جدوجہد میں مصروف ہیں

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.