بالوں کو صحت مند اور خوبصورت بنانے کیلئے یہ عادتیں ضرور اپنائیں

بال خواتین کی خوبصورتی کا ایک اہم جُز ہوتے ہیں جن کا خیال رکھنا نہایت ہی ضروری ہوتا ہے اور انہیں دلکش رکھنے کے لیے خواتین طرح طرح کے جتن کرتی ہیں لیکن ان عادتوں کو اپنا کر بالوں کو مزید حسین بنایا جاسکتا ہے۔

تحقیق کے مطابق 74 فیصد خواتین کا کہنا ہے کہ جس دن اُن کے بال روکھے اور خراب نظر آتے ہیں اُس دن اِن کے اندر خود اعتمادی بے حد کم ہوجاتی ہے جب کہ جس دن بال خوبصورت اور اچھے دِکھائی دیتے ہیں تُو خود اعتمادی بھی بڑھ جاتی ہے۔

اب سوال یہ ہے کہ اِنہیں خوبصورت، حسین اور جاذبِ نظر کیسے بنایا جائے؟

تمام خواتین کو زندگی کے کسی نہ کسی حصے میں ضرور ان مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے جن میں بالوں کا جھڑنا، روکھا پن، کمزور اور پتلے بال شامل ہیں، ان تمام مسئلوں سے چُھٹکارا حاصل کرنے کے لیے اگر آپ اپنی روز مرہ کے شیڈول میں مندجہ ذیل عادتیں شامل کرلیں گے تو آپ کے بال جَلد ہی حَسین ہوجائیں گے۔

1۔ نہانے سے قبل بال ضرور سُلجھائیں:

نہانے سے قبل بال سُلجھانا بالوں کو مضبوط بناتا ہے کیونکہ گیلے بالوں میں کنگھا کرنے سے بال ٹوٹنے کا زیادہ خدشہ ہوتا ہے تو نہانے سے قبل بالوں کو سُلجھانا اپنی عادت بنالیں، ایسا کرنے سے جسم میں خون کی روانی بھی بہتر ہوجاتی ہے۔

2۔ کنڈشنر کرنے کا طریقہ:

بہت سی خواتین بالوں میں کنڈشنر کا استعمال تو کرتی ہیں مگر وہ یہ نہیں جانتی کہ کنڈشنر کو استعمال کرنے کا صحیح طریقہ کیا ہے؟

سب سے پہلے کنڈشنر کو ہتھیلی میں لے کر بالوں کے درمیانی حصے میں لگائیں اُس کے بعد کنڈشنر کو آخر تک لے کے جائیں اور بالوں کے نیچے لگائیں پھر کنڈشنر کو بالوں کی جڑوں میں بھی لگائیں کیونکہ بالوں کی جڑوں کو بھی اس کی ضرورت ہوتی ہے، کنڈشنر کو کم سے کم 1منٹ تک بالوں میں لگا کر رکھیں۔

3۔ گرم پانی سے بال ہرگِز مت دھوئیں:

نیم گرم پانی سے بال دھونا بالوں کے لیے نقصان کا باعث نہیں ہوتا، اگرچہ بالوں کو تیز گرم پانی سے دھویا جائے تو یہ کمزور اور روکھے ہوجاتے ہیں اور ان کی چمک بھی ختم ہوجاتی ہے۔

4۔ بالوں کو براہ راست سورج کی روشنی سے بچائیں:

اگر آپ کو ایسا لگتا ہے کہ سورج کی خطرناک شعاعیں یعنی ’یو وی ریز‘ صرف انسان کی جلد کے لیے نقصان کا باعث ہوتی ہے تو یہ غلط ہے، سورج کی شعاعیں براہ راست بالوں پر پڑنے سے بال شدید متاثر ہوتے ہیں اور یہ اپنا قدرتی رنگ بھی کھو بیٹھتے ہیں لہٰذا گھر سے باہر دھوپ میں نکلتے وقت بالوں کو اسکارف یا دوپٹے سے ضرور ڈھانپ لیں۔

5۔ تکیہ غلاف کا کپڑا:

بالوں کے خراب ہونے کی ایک بڑی وجہ یہ بھی ہوتی ہے کہ آپ کُھردرے غلاف والے تکیے پر سر رکھ کر سوتے ہیں، کُھردرا کپڑا بالوں کی اوپری سطح جسے ’کیوٹیکل‘ کہتے ہیں اُسے خراب کرنے کا باعث بنتے ہیں، اگر ہوسکے تو تکیے کے غلاف کا کپڑا ریشم (سِلک) کا ہو، اس سے بالوں کے کیوٹیکل ٹھیک رہتے ہیں۔