کشمیر، عملی قدم کا وقت ہے - صبا احمد

کشمیر دنیا میں جنت کی جھلک، جس کے نیلگوں جھرنے زعفران کے پھولوں پر شبنم کے قطرے قوس قزح کے رنگ بکھیرتے تھے، اب ان پر لہو کے قطرے نظر آتے ہیں۔ مظلوم کشمیری آزادی کے پروانوں پر تیس دن سے بھارت نے کرفیو لگا رکھا ہے۔ معصوم لوگوں کو قید کر رکھا ہے۔ بھوکے پیاسے بچے بوڑھے نوجوان اور بچے سر بکف ہیں، آزادی یا موت!

تمام امت مسلمہ کی طرف سے مدد کے لیے آنکھیں منتظر ہیں۔ پاکستان کے جسم کا وہ حصہ بلکہ شہ رگ ہے، ہماری قائد اعظم اپنی زندگی کی آخری ایام میں بھی اس کی آزادی کے لیے فکر مند رہتے تھے۔ بھارت جو انسانی حقوق کے پامال کرنے زندہ لوگوں کو جلانے والا درندہ صفت فطرت کے لوگوں کی سر زمین ہے۔ کشمیر یوں پر ظلم وستم اور بربریت نے یہ ثابت کردیا ہے۔ بھارت کے شق ٣٧٠ کے خاتم پر کشمیریوں کی جداگانہ حیثیت ختم کر کے وہ کشمیر کو ہڑپ کر لینا چاہتا ہے۔ جو کشمیری ہونے نہیں دیں گے۔ وہ ٧٢ سالوں سے اپنے حق رائے دہی کے لیے لڑ رہے ہیں۔ کتنی نسلیں قربان کر چکے ہیں۔ اب ان کا پانچ سال کا بچہ جسے پریپ کلاس میں ہونا چاہیے تھا وہ جہاد کر رہا ہے۔ بھوکا پیاسہ علاج وادویات کا منتظر نہیں بلکہ آزادی اور پاک فوج کا منتظر ہے۔ کشمیری کسی صورت میں بھارت کی شہری نہیں کہلانا چاہتے وہ پاکستانی پرچم کو اپنا کفن بنائے ہوئے ہیں اور ہم کیا کر رہے ہیں۔ اقوام متحدہ کا پچاس سال کے بعد دوبارہ اجلاس کو ہم کامیابی کیسے تسلیم کریں جب تک کشمیر کو خود ارادیت کا حق نہیں مل جاتا۔ ان کا سوشل میڈیا تمام. مواصلاتی نظام کو دنیا سے کاٹ دیا گیا ہے تاکہ دنیا ان سے بے خبر رہے۔ بھارت اپنے ظلم وستم کا بازار گرم کیے ہوئے ہے۔ مگر اللہ تو باخبر ہے۔ ان کی فریاد ضرور سنے گا ان شاءاللہ مگر ٥٦ اسلامی ممالک کہاں ہیں...؟ .

یہ بھی پڑھیں:   سقوط کشمیر - عشرت سلطانہ

ترکی پاکستان اور چائنہ مدد کے لیے تیار ہیں مگر ابھی کوئی پیش رفت نہیں ہو رہی۔ باتیں ہو رہی ہیں، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی صاحب کی مظلوم کشمیریوں خبر تو لیں۔ .مودی دورے کر رہا ہے۔ باجوہ صاحب بھی۔ ہر پاکستانی کو ان کی آواز بننا ہے۔ سرحدوں پر بھارت لائن آف کنٹرول پر فاٸرنگ میں مصروف ہے۔ نہتے پاکستانی شہری شہید ہو رہے ہیں۔ حکومت اجلاس بلانے میں لگی ہے۔ بھارت کرفیو نہیں اٹھا رہا تو ڈونلڈ ٹرمپ کیا کرے گا مودی سے ملاقات کرکے؟ کشمیریوں کا پرسان حال کوئی نہیں، کوئی تو محمد بن قاسم بنےم مظلوم کشمیری بہنوں ماؤں اور بیٹیوں کا رکھوالا۔ جن کے بھائی جیلوں میں قید اور شہید ہو رہے ہیں۔ پیلٹ گنوں سے نابینا، کلسڑ بموں سے شہید، ہر درد مند دل بے چین ہے۔ آنسو بہانے سے کام نہیں چلے گا۔ اب ان کی آواز بن کر سوشل میڈیا پر آ جائیں اور بھارت کا اصلی چہرہ پوری دنیا کو دکھائیں۔ جہاں سے بھی کشمیریوں بر ظلم وستم کی کوئی بھی ویڈیو ملے، اسے شیئر کریں۔ پوری دنیا میں جہاں تک آپ پہنچ سکتے ہیں۔ اس کے ذریعے ان شاء االلہ قافلہ بنے گا۔ حریت قیادت جیل میں ہے تو کیا ہوا۔ اللہ تو ہر جگہ موجود ہے، وہ ہماری مدد کرے گا، ہم قدم تو بڑھائیں۔