نریندر مودی سن لو، اینٹ کا جواب پتھر سے دیں گے - عمران خان

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ وہ نریندر مودی کو پیغام دینا چاہتے ہیں کہ آپ ایکشن لیں ہم اینٹ کا جواب پتھر سے دیں گے۔ بھارت نے اپنے اقدام سے نظر ہٹانے کے لیے آزادکشمیر میں ایکشن کا پروگرام بنا رکھا ہے لیکن پاکستانی فوج کو اس کا پتا ہے۔ نریندر مودی ہم تیار ہیں، جو آپ کریں گے ہم آخر تک جائیں گے، پاکستانی فوج تیار ہے، قوم تیار ہے، قوم فوج کے شانہ بشانہ لڑے گی، آزادی کے لیے جنگ میں شہداء کا مرتبہ پیغمبروں کے بعد ہوتا ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ مودی کو یہ کارڈ کھیلنا بہت مہنگا پڑے گا، اب دنیا کی نظر کشمیر پر ہے۔ انھوں نے کہا کہ ’نریندر مودی کسی غلط فہمی میں نہ رہیں کہ آپ کشمیر پر قانون پاس کر کے کشمیریوں کو غلام بنا لیں گے۔ جو آپ کریں گے تو ہم مقابلے کے لیے آخر تک جائیں گے۔ پاکستان پورح طرح تیار ہے، فوج اور قوم ایک پیچ پر ہیں۔

آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی کے خصوصی اجلاس سے خطاب وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی آزادی کے دن میں اور مشکل ترین وقت میں کشمیری بھائیوں کے ساتھ ہوں، ہماری ہندوستان کے ساتھ مفادات کی کشمکش نہیں، ہندوستان کے خلاف ہم ایک نظریے کے ساتھ کھڑے ہیں۔ پاکستان کشمیر کے مسئلے کو لے کر دنیا کے ہر فورم پر جائے گا۔'ہم عالمی عدالتِ انصاف میں جائیں گے۔ میں کشمیر کا سفیر بن کر اس مسئلہ کو دنیا میں مزید اجاگر کروں گا۔ وزیرِاعظم نے کہا کہ پاکستان اقوامِ متحدہ کے سامنے مسئلہ کشمیر اٹھا رہا ہے اور اب یہ اقوامِ متحدہ پر ہے کہ وہ کشمیر سے متعلق قراردادوں پر کیسے عمل کرواتا ہے۔ عمران خان نے اقوامِ متحدہ کو پیغام دیتے ہوئے کہا کہ ’کشمیری آپ کی طرف دیکھ رہے ہیں۔‘

یہ بھی پڑھیں:   دو گندے ہو چکے، ایک ناکام - ایاز امیر

وزیراعظم نے کہا کہ ہمارے سامنے آر ایس ایس کے بڑی خوفناک آئیڈیالوجی ہے، آر ایس ایس کی آئیڈیالوجی ہٹلر کی پالیسی سے متاثر ہیں اور اسی آئیڈیالوجی نے مہاتما گاندھی کو قتل کیا جبکہ اس سوچ کے پیچھے مسلمانوں کے خلاف نفرت ہے، آر ایس ایس والے سمجھتے ہیں مسلمان 6 سو سال حکومت نہ کرتے تو یہ عظیم قوم ہوتے اور یہ سمجھتے ہیں مسلمانوں نے ان پر حکومت کی اب بدلہ لینا ہے، تاہم میں نے نریندر مودی کی اصل شکل کو میں نے دنیا کے سامنے رکھا۔ انھوں نے کہا کہ ’آر ایس ایس نے جرمنی کی نازی پارٹی سے سیکھا ہے کہ اگر تھوڑے لوگ منظم ہو جائیں تو پوری قوم پر غالب آ سکتے ہیں۔ بی جے پی نے انڈیا میں یہی کیا ہے۔‘

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ملک کا نظریہ ختم ہونے سے ملک بنانا ری پبلک بن جاتا ہے، مودی نے اپنا آخری کارڈ کھیل دیا یہ کارڈ مودی کو بہت بھاری پڑے گا اور جب مقبوضہ وادی سے کرفیو اٹھے گا تو پھر ہمیں جو پتہ چلے گا، اس کا بڑا خوف ہے۔ جب کہ جولوگ دو قومی نظریہ کے خلاف تھے، آج کہتے ہیں قائداعظم ٹھیک کہتے تھے۔

عمران خان نے کہا کہ نہرو کے کشمیریوں سے کیےگئے وعدے نظر انداز کردیے گئے، مودی نے اقوام متحدہ کی قرار دادیں ایک طرف پھینک دی ہیں، یہ لوگ سپریم کورٹ اور کشمیر کے ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف گئے تاہم مودی کے آخری کارڈ کے بعد کشمیراب آزادی کی طرف جائے گا جبکہ ہم دنیا کو بار بار پیغام دے رہے ہیں اگر جنگ ہوئی تو دنیا ذمہ دار ہوگی۔