پرویز مشرف کے رشتہ دار نے میکا سنگھ کو کیسے بلایا؟

پاک بھارت کشیدگی کے باوجود 15رکنی بھارتی طائفے کی پاکستان آمد پرعوام حیران ہے۔ بھارتی گلوکار میکا سنگھ کو ڈیڑھ لاکھ ڈالرز معاوضہ دیاگیا اور وہ زمینی راستے سے پاکستان آئے۔ جبکہ ایک صوبے کے گورنر نے ان کاخصوصی استقبال کیا۔ ایسے حالات میں کہ جب دونوں ممالک کے سفارتی تعلقات محدود کر دیے گئے ہیں اورتمام پاکستانی چینلز پر بھارتی مواد نشر کرنے پر پابندی عائد ہے، مگر بھارتی گلوکار کو اجازت دیدی گئی۔

تفصیلات کے مطابق، پاکستان اور بھارت کے درمیان لائن آف کنٹرول پر بڑھتی کشیدگی کے باوجود سابق صدر پرویز مشرف کے ارب پتی قریبی عزیز اور دوست نے بھارتی گلوکار میکا سنگھ اور ان کے ساتھیوں کو اپنی بیٹی کی شادی میں مدعو کیا۔ میکا سنگھ کو ان کے 14ساتھیوں کے ہمراہ کراچی، لاہور اور اسلام آباد کے 30 روز کے ویزا مختلف وزارتوں کی خصوصی اجازت اور ایجنسیز کی کلیئرنس پرجاری کیے گئے۔ میکا سنگھ زمینی راستے سے پاکستان آئے اور ایک صوبے کے گورنر نے ان کا خصوصی استقبال کیا۔

باوثوق ذرائع کا کہنا ہے کہ میکا سنگھ کو ڈیڑھ لاکھ ڈالرز ادا کیے گئے ۔جبکہ میکا سنگھ اور ان کے آٹھ ساتھیوں کو فرسٹ کلاس ٹکٹ بھی دیے گئے۔ پرویز مشرف کے عزیز کی بیٹی کے شادی کی تقریب 8اگست کو ڈی ایچ اے کراچی میں منعقد ہوئی تھی۔ ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ دولہا نے اس خواہش کا اظہار کیا تھا کہ اس کی شادی میں میکا سنگھ پرفارم کرے۔ دولہے کی اس خواہش کو پورا کرنے کے لیے پرویز مشرف کے عزیز نے اپنے اثرورسوخ کا استعمال کرتے ہوئے میکا سنگھ کو پاکستان بلوایا۔ شادی کے شرکا ء سے درخواست کی گئی تھی کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی کے باعث میکا سنگھ کی پرفارمنس کی ویڈیو نہ بنائیں۔ تاہم اس کے باوجود میکا سنگھ کی پرفارمنس کی ویڈیو لیک ہوگئیں اور انہیں سوشل میڈیا پر وائرل کردیا گیا، جس پر عوام نے نا صرف اس تقریب کے انعقاد پر شدید تنقید کی بلکہ حکومت کو بھی آڑے ہاتھوں لیا۔

یہ بھی پڑھیں:   دنیا کے 10 آلودہ ترین شہروں کی فہرست میں پاکستان کے دو شہر شامل

یہاں یہ بتانا بھی ضروری ہے کہ بھارتی فل انڈسٹری نے پاکستانی اداکاروں اور گلوکاروں پر پابندی عائد کر رکھی ہے ، یہاں تک کے پاکستانی کرکٹرز بھارتی کرکٹ لیگ ، آئی پی ایل نہیں کھیل سکتے ۔جب کہ دونوں ممالک سفارتی تعلقات بھی محدود کرچکے ہیں ۔سوشل میڈیا پر لوگوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ پچھلے دنوں ہونے والی شادیوں خاص طور پر نومبر ، دسمبر ، جنوری اور فروری کے مہینوں میں بہت سے لوگ بھارتی فنکاروں کو مدعو کرنا چاہتے تھے ، مگر انہیں اجازت نہیں دی گئی۔تمام چینلز اور کیبلز پر کسی بھی طرح کے بھارتی مواد نشر کرنے کی ممانعت ہے ایسے حالات میں حکومت پاکستان نے بھارتی گلوکار کو خصوصی پروٹوکول کیوں کر دیا۔