ڈیفالٹ سیٹنگ - فرح رضوان

آگیا جینز پہن کر بھی اگر وقت نماز ….
ملیشیا میں قدم قدم پر آپ کو مساجد مل جائیں گی ، صاف ستھری وضو کی جگہ ، چھوٹے سہی مگر باپردہ پرسکون کمرے- مگر سب سے اہم بات جو وہاں قیام کے دوران تواتر سےدیکھی وہ ماڈرن خواتین کی نماز میں ستر پوشی کا انتہائی اہتمام تھی . وہاں تین بحثیں زیر بحث نہیں دیکھیں ؛یعنی یہ اصول غالبا طے شدہ ہیں ان پر سوال جواب فتووں میں قوم اپنا وقت کھوٹا نہیں کرے گی ، نیل پالش کے ساتھ وضو نہیں ہوتا کا مطلب نہیں ہوتا خواہ نیل پالش اس کی خاطر مسلمان ہوجاۓ -

نماز میں عورت کی ستر سر سے پیر تک ڈھیلا مکمل لباس جو باریک نہ ہو ، آستین مکمل بازو کی ہو - اورعورت کی نماز بھی ویسی جیسے رسول اللہ صل اللہ علیہ وسلم نے سکھائی . بہرحال شدید تنگ آمد ، بجنگ آمد قسم کے کپڑوں میں ملبوس ہر عمر کی فیشن کی دلدادہ مسلم دوشیزائیں کثرت سے، مالز میں ورکر کے طور پر ہوں یا خریدار کے طور پر لیکن اذان کے بعد جوق در جوق نماز کو لپکتیں ، جیسے ان سب کی گھٹی میں خوف پڑا ہو کہ نماز کا حساب تو ہونا ہی ہے ، خواہ تم کوئی بھی ، کیسے بھی ، کہیں بھی ہو . مسجد کے خواتین کے حصے میں لونگ سکرٹس اور پل اپ حجاب بکثرت اور صاف ستھرے رکھے ہوتے ہیں . ان تمام ہی جوان لڑکیوں کے ساتھ کوئی اماں ، خالہ ، پھپھو نگران نہیں ہوتیں یہ خود ہی ہر نماز کے وقت مسجد آکر سکرٹ پہن کر پرسکون نماز ادا کرتی ہیں …. ایک چست پاجامے ، جینز یا ایسے ہی کسی پہناوے میں جو جو بھی قباحتیں نماز خراب کرنے کا موجب بن جاتی ہیں ان سے خلاصی اور راحت پالیتیں . اللہ تعالیٰ بہت قدردان ہے نہ جانے کیا کچھ معاف فرما دے ، نہ جانے کس ذرے جتنی نیکی کو آفتاب بنا دے ، دل سے دعا ہے کہ یہی تقوی کا ٹمٹماتا چراغ ظلمت کے اندھیروں کو مٹانے کا سبب بن جاۓ .
ہمارے لیۓ سیکھنے کی بات یہ ہے کہ کم از کم اتنا تو کر ہی لیں کہ نماز میں عورت کی ستر کو جان لیں، ….

بجاۓ اسکے کہ جواس طرف توجہ دلائے اسکی جان لیں ، خفا ہو جائیں اس سے ، بحث شروع کر دیں ! رشتہ درکار ہو یا جاب انٹرویو یا پریزنٹیشن یا کسی معتبر شخصیت سے ملاقات سب سے پہلا خیال یہی کہ کیا پہنا جاۓ کہ قابل قبول ہو جائیں ، یہی ذرا سی بات نماز کے لیۓ بھی کہ ، ڈریس کوڈ مکمل نہ ہونے پر نمازیں ریجیکٹ نہ ہو جائیں ، رشتہ ریجیکٹ ہونے پر، نوکری یا کاروباریا ، قرضے یا ، چھٹی کی درخواست ریجیکٹ ہونے پر کتنا صدمہ ہوتا ہے نا! جبکہ ان کے نہ ملنے پر آخرت میں سوال نہیں ، ان پرہمیشہ کی زندگی کا دارومدار بھی نہیں - تو یہ بھی ممکن ہے اپنے بیگ میں سکرٹ یا عبایا نمازکےلیے رکھ لیں یوں امید ہے کہ دن میں پانچ بارگھر یا باہر جب اللہ کے سامنے اس ستر پوشی کے عمل سے گزرنا پڑے گا تو ان شا اللہ ضمیر سوال ضرور کرے گا کہ اللہ کے سامنے ستر کا اتنا خیال اور "گھر گھر کے لوگوں " نامحرم کزنز ، بہنوئی ، پھوپھا ، خالو کے سامنے دن رات بے ستر ، محلے پڑوس ، درسگاہوں ، بازاروں میں اوباشوں کی آماجگاہوں میں اس قدر بے ستر !
جس طرح بھاری بھرکم آٹومیٹک گلاس ڈور صرف آپکی قربت کے احساس سے ہی ، بغیر مشقت کھل جاتا ہے اسی طرح ناجائز کی طرف لپکنے پر حرام کے ہی دروازے کھلے ملتے ہیں .

جبکہ ادھر عقل ایمانی پر تالے پڑے نہیں کہ حلال در بھی مقفل ہو کر رہ جاتے ہیں - جب ہم بڑی سطح پر ڈیزائنرز کی کٹھ پتلی بننے سے انکار کریں گے نا! تو وہ گھٹنوں کے بل گرنے پر مجبور ہو کر آپ کے لیۓ تہذیب یافتہ ، با ستر لباس تیار کریں گے ، بلکہ اسے ہر طرح سے ترویج بھی دیں گے - غیر اسلامی ممالک میں تو بڑے بڑے آؤٹ لیٹس مجبور ہوگۓ ہیں جہاں حلال فوڈ بیچنے پر وہیں ، مسلمان خواتین کے لیۓ مناسب لباس بنانے پر بھی ، یہی نہیں ، اللہ کی شان دیکھیے کہ ، حرام سے بچے راستے کسطرح کھولتا ہے ، کہ منی می ٹرینڈ کے تحت ماں یا بڑی بہن کے جیسے چھوٹی چھوٹی بچیوں کے لباس بھی ، مکمل بازو ڈھیلے کرتے مناسب لمبائی جو کہ سی تھرو بھی نہ ہو گلا گہرا نہ ہو سب کا خیال رکھتے بننے لگے ہیں ، تو غیر مسلم خواتین نے گرمیوں میں بھی اسے لباس اس لیۓ پہننا شروع کر دیے کہ سائنس کہتی ہے ، دھوپ میں جسم ڈھکا ہونا چاہیے ، برانڈڈ سٹورز پر چالیس ڈالرمع ٹیکس کے حجاب مسلمز سے زیادہ غیر مسلم خواتین خریدار بخوشی لے رہی ہوتی ہیں - لباس اللہ تعالیٰ نے اپنی ایک آیت یعنی نشانی بتلائی ہے ، لگتا یوں ہے کہ گویا جو بھی اپنے رب کی اس نشانی کو پا لے گا ، نشانہ نہ بن سکے گا ، اپنے دشمن شیطان کا ، اور باقیوں کا نشان مٹانے پر شیطان کمر بستہ رہے گا -

ٹیگز

Comments

فرح رضوان

فرح رضوان

فرح رضوان کینیڈا میں مقیم ہیں۔ خالق کی رضا کی خاطر اس کی مخلوق سے لگاؤ کے سبب کینیڈا سے شائع ہونے والے ماہنامے میں قریباً دس برس قبل عائلی مسائل پرلکھنا شروع کیا تھا، اللہ کے فضل و کرم سے سلسلہ جاری ہے۔ دلیل کی مستقل لکھاری ہیں

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.