قابض بھارت نے مقبوضہ کشمیر کو دنیا کی سب سے بڑی جیل بنا دیا۔ مہتاب عزیز

جیل کی طرز پر مقبوضہ کشمیر کی نیشنل ہائی وے پر سفر کرنے کے لیے کشمیریوں کے ہاتھوں پر مہریں لگائی جا رہی ہیں۔

بھارتی حکام نے مقبوضہ کشمیر کی نیشنل ہائی وے پر عام شہریوں کی نقل و حرکت پر پابندی عائد کرتے ہوئے اسے فوج اور پیرا ملٹری کے وفود کیلئے مخصوص کردیا ہے۔

جموں سری نگر نیشنل ہائی وے پر پابندی سے مقبوضہ کشمیر کی عوام کو شدید مشکلات سامنا کرنا پڑا رہا ہے۔ تقریبا 70 لاکھ آبادی کے لیے بازاروں، سکولوں اور ہسپتالوں تک رسائی کے لیے یہ ہائی وے واحد راستہ ہے۔

بھارت کا یہ اقدام اسرائیل کی جانب سے فلسطینیوں پر مرکزی شاہراوں پر سفری پابندیوں کی نقل ہے۔ یاد رہے کہ بھارت میں برسرا اقتدار بی جے پی نے اپنے انتخابی منشور میں کشمیری کی خصوصی حیثیت اور آبادی کے تناسب کی ضمانت دینے والی بھارتی آئین کی شقوں 370 اور 35 اے کو ختم کرنے کا اعلان بھی کیا ہے۔ جس کا واضع مطلب ہے کہ بی جے پی نے اسرائیل کی طرز پر آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔