پاکستان کی جیت - محمد عامر خاکوانی

پاکستانی کرکٹ ٹیم نے آسٹریلیا کو بڑے مارجن سے ہرا کر سیریز جیت لی اور شائقین کے دل بھی ٹھنڈے کر دیے۔ محمد عباس نے نہایت متاثر کن بائولنگ کرا کر دنیا بھر کے ماہرین کی توجہ حاصل کر لی۔ ٹیسٹ کرکٹ کے وہ نمبر ون بائولر بننے کی طرف گامزن ہیں۔ بدقسمتی سے انہیں ڈیڈ پچز پر بائولنگ کرانا پڑ رہی ہے لیکن یہاں بھی کمال کر رہے ہیں۔ جنوبی افریقہ کے دورے میں عباس کو فائدہ پہنچ سکتا ہے انہیں ون ڈے میں بھی آزمانا چاہیے، اگر نیوزی لینڈ کے خلاف نہیں تو جنوبی افریقہ کے خلاف ون ڈے سیریز میں یہ تجربہ کیا جا سکتا ہے۔ ایک فارمیٹ میں کامیاب کھلاڑی کو دوسرے فارمیٹ میں آزمانے کا نقصان کوئی نہیں۔ فخرزماں کو صرف ون ڈے تک محدود کیا ہوا تھا ،ٹیسٹ میں موقعہ ملنے پر اس نے پرفارم کیا ہے۔

اس میچ میں سرفراز کی اپنی بیٹنگ اور کپتانی دونوں عمدہ رہی ہیں۔ ایک مکمل تبدیل شدہ سرفراز سے اس بار واسطہ پڑا۔ میرے نزدیک اس کی وجہ محمد رضوان کا بطور متبادل موجود ہونا تھا۔ سرفراز نے اپنی صلاحتیوں کو بھرپور طریقے سے استعمال کرنے کی کوشش کی، مسابقت کے دبائو نے اسے مجبور کیا اور ہر بڑے کھلاڑی کی طرح سرفراز نے کمال پرفارم کیا۔ دونوں اننگز میں رنز کئے، کیپنگ میں بہتری آئی اور خاص کر کپتانی بھی تبدیل لگی۔ کھلاڑیوں پر چیخنے چلانے اوراینگری ینگ مین بننے کے بجائے سکون اور اعتماد سے کپتانی کی، کمنٹیٹر بھی اس پر حیران ہو کر تعریف کرتے رہے۔ دراصل ہم نے سرفراز کو کچھ زیادہ ہی ریلیکس کر دیا تھا۔ جب کسی کھلاڑی کو لگے کہ اس کی جگہ مستقل طور پر پکی ہے اور وہ چاہے جو بھی کرے، ٹیم سے باہر نہیں ہوسکتا، تب وہ زیادہ ایزی ہوجاتا ہے۔ کھلاڑی پر غیر ضروری دبائو نہیں ہونا چاہیے ، انہیں تواتر سے مواقع ملیں اور پورا وقت دیا جائے، لیکن کسی بھی کھلاڑی کو یہ احساس نہ ہو کہ وہ ٹیم سے بڑا ہے۔ مسابقت کا دبائو ضروری ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   مرغی، انڈے اور پاکستان کی معیشت - اعجاز احمد

بہرحال سرفرازاحمد اس میچ میں بہت اچھا کھیلے۔ زبردست ، شاندار۔ ہماری محبت کرکٹ سے ہے، جو اچھا کھیلے گا اس کی جی بھر کر تحسین ہوگی۔ تنقید کسی شخصیت پر نہیں، بری بلکہ متواتر بری کارکردگی پر ہے۔ سرفراز نے اس بار دل جیت لئے۔ اللہ کرے کہ اس کی اچھی فارم برقرار رہے۔ ورلڈ کپ میں زیادہ وقت نہیں رہ گیا اور اس وقت ہم کپتان بدلنا افورڈ نہیں کر سکتے۔ سرفراز کو اپنی صلاحتیوں کو بھرپور طریقے سے استعمال کرنا چاہیے، ان میں پوٹینشل ہے، بس اسے ایکسپلور کرتے رہیں۔ کرکٹ کے میدان سے آنے والی ہر خوشی روح کو سرشار کر دیتی ہے۔ آج بھی ایسی ہی کیفیت ہے۔

Comments

محمد عامر خاکوانی

محمد عامر خاکوانی

محمد عامر ہاشم خاکوانی کالم نگار اور سینئر صحافی ہیں۔ روزنامہ 92 نیوز میں میگزین ایڈیٹر ہیں۔ دلیل کے بانی مدیر ہیں۔ پولیٹیکلی رائٹ آف سنٹر، سوشلی کنزرویٹو، داخلی طور پر صوفی ازم سے متاثر ہیں

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.