ڈراپ…… مبشر علی زیدی

’’ہم نوجوان کھلاڑیوں کی ٹیم بنا رہے ہیں۔
آپ کو شامل نہیں کر سکتے۔‘‘
ابو کو بتایا گیا۔
وہ اچھے کھلاڑی تھے۔
لیکن قومی ٹیم میں شامل نہیں ہو سکے۔
انھوں نے مجھ سے امیدیں وابستہ کر لیں۔
میں نے جان لڑا دی۔
کلب میچوں میں پرفارمنس دی۔
کیمپ میں بلایا گیا تو صلاحیتیں ثابت کر دیں۔
لیکن ٹیم کا اعلان ہوا تو نام نہیں تھا۔
’’ہم تجربہ کار کھلاڑیوں کی ٹیم بنا رہے ہیں۔
آپ کو شامل نہیں کر سکتے۔‘‘
مجھے بتایا گیا۔
گھر پہنچا تو ابو نے پوچھا،
’’کیا ہوا؟‘‘
میں نے کہا،
’’ابو! ہم الیکٹ ایبل نہیں ہیں۔‘‘