فاتح…… مبشر علی زیدی

’’ہم نے اسرائیل کو نیست و نابود کرنے کے لئے اسلامی فوج بنائی ہے۔‘‘
شیخ ڈوڈو نے آگاہ کیا۔
’’اس کا بجٹ کتنا ہے؟‘‘
میں نے پوچھا۔
’’بجٹ کی کیا ضرورت؟‘‘
شیخ ڈوڈو ہنسا۔
’’کیوں؟ اسلحہ نہیں خریدو گے؟‘‘
میں نے دریافت کیا۔
’’اسلحہ، کس کے لئے؟‘‘
’’فوجیوں کے لئے۔‘‘
’’کون سے فوجی؟‘‘
’’یہ کیسی فوج ہے جس میں فوجی نہیں ہیں۔‘‘
’’کئی جرنیل ہیں۔ وہ کافی ہیں۔‘‘
میں نے سوال کیا،
’’اسرائیل کو نیست و نابود کرنے کے لئے یہ جرنیل کیا کر رہے ہیں؟‘‘
شیخ ڈوڈو نے جواب دیا،
’’سحری اور افطاری میں بد دعائیں کر رہے ہیں۔‘‘