ایک…… مبشر علی زیدی

’’پاپا! شمالی اور جنوبی کوریا کے رہنماؤں کی ملاقات ہوئی ہے۔
کیا ماضی میں کوئی دو ملک ایک ہوئے ہیں؟‘‘
میرے بیٹے نے پوچھا۔
’’ہاں، ہم نے دو ویت نام دیکھے تھے۔
پھر انھیں ایک ہوتے دیکھا۔
ہم نے دو یمن دیکھے تھے۔
پھر انھیں ایک ہوتے دیکھا۔
ہم نے دو جرمنی دیکھے تھے۔
پھر انھیں ایک ہوتے دیکھا۔‘‘
میں نے بتایا۔
’’کیا سابقہ مشرقی اور مغربی پاکستان ایک ہوسکتے ہیں؟‘‘
بیٹے نے سوال کیا۔
میں نے کہا،
’’بیٹے! راستہ بھولنے والے واپس گھر آ جاتے ہیں۔
لیکن جنھیں جھگڑاکرکے نکالا جائے، وہ کبھی واپس نہیں آتے۔‘‘