[نظم کہانی] اصل مسائل - محمد عثمان جامعی

بستی میں منگل کو عزت لوٹی گئی اک عورت کی

بدھ کو غنڈے اٹھا کے لے گئے اک مزدور کی بیٹی کو

جمعرات کو بھرے اُجالے اک معصوم کا قتل ہوا

آج جمعہ تھا

آج یہاں ہر فرقے مسلک کی مسجد

گونجتی تھی تقریروں اور مذہب کی الگ تعبیروں سے

عقیدتوں پر مخالفوں کے، تیر و نشتر چلتے تھے

زبانیں تلواریں ٹھہری تھیں، حرف کے خنجر چلتے تھے

عزت لُٹنے، قتل اور اغوا کا ہونٹوں پر نام نہ تھا

یہ تو ظلم تھا انسانوں پر، خطرے میں اسلام نہ تھا