کاش کچھ ایسا ہو - عائشہ حمیرا

زینب کے مجرم کو عبرت ناک سزا ملنی چاہیے… ہاں بالکل! ہم سب کے دل کی یہی آواز ہے۔ اس کے ساتھ کسی قسم کی نرمی نہ رکھی جائے۔ ایسے درندوں کے لیے تو کوئی رحم نہ ہونا چاہیے۔ سچ ہے، لیکن سزا کیا ہو؟ پھانسی دے دی جائے؟ میرا دل تو کہتا ہے اس سے بھی بڑی کوئی سزا ہو۔ آخر کیسے کیسے نہ تڑپایا ہوگا معصوم بچی کو اس نے؟

پھر کیا سزا ہونی چاہیے اُس کو؟ چوک میں پھانسی؟ لیکن پھانسی جیل میں ہو یا چوک پر درد تو ایک جتنا ہی ہوتا ہوگا۔ اور میڈیا کے دور میں تو ہر گوشہ دنیا بھر کے لیے چوک ہی ہے۔ میرا دل کہتا ہے کہ ایسے شقی القلب کی سزا اتنی بڑی ہو کہ روح کانپ جائے۔ ایسی سزا کہ کچھ سمجھ بھی تو آئے! جس کو سوچ کر روح کانپ جائے۔ بالکل ایسی ہی سزا ہو کہ آئندہ کوئی ایسا کرنے کا سوچے بھی تو اس کے بدن میں خوف سے جھرجھری دوڑ جائے۔

ٹھہرو! مجھے کچھ یاد آ رہا ہے، ایسی سزا جس سے روح کانپ جائے، جھرجھری دوڑ جائے ۔۔۔۔۔۔ ہم کالج میں تھے تو ایک بار اسلامیات کی ٹیچر نے بتایا تھا کہ اسلام میں بدکار کی سزا سر عام سنگسار کرنا ہے۔ یعنی اتنے پتھر مارنا کہ وہ مر جائے۔ تب ہم کہتے تھے اُف اتنی وحشیانہ سزا؟ انسان کی روح کانپ جائے، سوچ کر ہی جھرجھری دوڑ جائے،یہ کہاں کی انسانیت ہے؟

آج ماضی کے اپنے ایسے ہی جملے یاد آ گئے یعنی کہ اسلام نے پہلے ہی ایسی سزا بتا دی اس جرم کی۔ ہاں! تو پھر، کبھی کسی کو ہوئی کیوں نہیں؟ اب تو یہی دل کہنے لگا ہے کہ ایک بار کسی کو ہوگئی ہوتی تو ان درندوں کو اتنی ہمت نہ ہوتی۔

مگر، ایسا کیسے ہو؟ اس کے لیے تو اسلامی نظام لاگو کرنا پڑے گا۔ وہ کیوں لاگو نہیں ہوتا؟ کیونکہ اکثریت کے ووٹ سے حکومت بنتی ہے اور حکومت جو چاہتی ہے وہی ہوتا ہے۔ تو اکثریت؟ کیا اکثریت نہیں چاہتی؟ کیا واقعی؟ اکثریت نہیں چاہتی کہ اسلامی نظام لاگو ہو۔ سنو! کہیں ایسا تو نہیں کہ اکثریت کو اپنی اپنی شامت آ جانے کا خوف ہی اس چاہت سے باز رکھتا ہو؟

نہیں ایسے نہ کہو خدارا! ہم تو ایسے نہیں۔ ہماری اکثریت ایسی نہیں۔

تو پھر؟ ہم کیوں اسلامی نظام کے لیے ووٹ نہیں دیتے؟ شاید ہمارے گھر کی زینب ابھی محفوظ ہے اس لیے۔ شاید!

اٹھو! اکثریت کو کون بتائے گا کہ آپ کی بیٹی کا محافظ صرف اسلامی نظام ہے؟ سچ ہے، ہمیں ہی بتانا ہوگا اور یہ بھی کہ اس وقت سب سے بڑھ کر حفاظت کی ضرورت آپ کی ہی بیٹی کو ہے کیونکہ جن کے ساتھ یہ واقعہ ہو چکا وہ تو ہر ضرورت سے بے نیاز ہو چکیں۔ چلو اٹھو، پھر بتائیں سب کو!

اٹھو وگرنہ حشر نہیں ہو گا پھر کبھی