کہاں ہے؟ - خرم علی راؤ

کچھ اڑتی اڑتی سی خبریں سنی تھیں، کچھ کہانیاں، کچھ افواہیں سی کانوں میں پڑی تھیں کہ دنیا میں کوئی ایسا خطہ، کوئی ایسا زبردست "زوٹوپیا" نامی ملک ہے جہاں کے رہنما، لیڈران، قائدین،وغیرہ اسے گالیاں دے کر بھی نہ صرف خو ش باش اور مقبول رہتے ہیں، بلکہ سچ بولنے کے نام پرخوب تلبیس( سچ جھوٹ کو ملا کر پیش) کرتے ہیں اور مقبولیت کی خود ساختہ بلندیوں پر بھی متمکن رہتے ہیں کہ د نیا میں کوئی ایسا خطہ کوئی ایسا ملک بھی ہے جہاں کے دانشور اور فضلاء، صحافی و ادیب اپنی دانشوری و ادب و صحافت کی دکان اپنے ہی ملک کی بے عزتی کر کے چمکائیں اور داد بھی پائیں۔

جہاں کرپشن کو ایک فن کا درجہ دینے والے عالمگیر شہرت کے حامل بڑے بڑے فنکارنہ صرف رہتے ہیں بلکہ خوش باش رہتے ہیں۔ کرپشن کے لیے بڑی تندہی سے مختلف نظام وضع کرنے والے معززین، معزز بھی سمجھے جاتے اور رہبر بھی، اور جب کھی شاذ ونادر شومئی قسمت اگر پکڑے جائیں تو غیظ و غضب میں اس درخت کو ہی کاٹنے کی باتیں کرنے لگ جائیں جس نے انہیں سایہ اور پناہ اور کرپشن کے لا محدود مواقع فراہم کیے اور مزے کی بات یہ کہ اس درخت کے کاٹنے کی کوششوں کے حق میں اپنے درباری دانشوروں سے دلائل و براہین کے انبار بھی لگواتے ہیں۔

جہاں خون خاک نشیناں تو سستا اور پانی بہت مہنگا ہو، جہاں غریب کی زندگی ایک عذاب ایک وبال سے کم نہ ہو جہاں معصوم بچے بچیاں بھی محفوظ نہ ہوں۔ جہاں جھوٹ کے چلتے جھکڑ چلتے ہی رہتے ہوں اور مکر کی اٹھتی آندھیاں فراٹے بھرتی ہوں۔ جہاں عریانی اور بے حیائی کا درجہ روز بہ روز بلندیوں کی جانب مائل بہ پرواز ہو۔ جہاں صرف اندھے عقیدوں، دقیانوسی غلیظ روایتوں، اور جاہلانہ روم و رواج کی حکمرانی ہے او ان ہی کی پیروی کی جاتی ہو ۔ جہاں تعلیم و تربیت کو قصداً، اراداتاً منصوبہ بندی سے اس لیے تباہ کیا جائے کہ باشعور و تعلیم یافتہ تو حقوق مانگے کا اس لیے جاہل ہی رہنے دو والی سوچ کا راج ہو۔جہاں علم و تحقیق کو جعل سازی و تنسیخ کردیا گیا ہو،جہاں خدمت کرنے والے اور ملک پر احسانات کرنے والے، اسے خون جگر پلانے والے، اسے جوہری ٹیکنالوجی دینے والے نظر بند رہیں اور اس کو لوٹنے والے دنیا بھر میں اس کا نام اچھالنے والے آزاد گھومتے پھرتے ہوں۔

ایسا الف لیلوی خطہ زمین جہاں کے لوگ اپنے دین کے نام پر زندگی تو فوراً قربان کرنے پر تیا ر ہو جائیں مگر زندگیوں کو دین پر لانے میں ان کی سانسیں رکنے لگیں۔ جہاں مال و منال کی خاطر ہر حد توڑ دی جاتی ہو،ہر لکیر عبور کرلی جاتی ہو،،جہاں قبر، حشر، آخرت کی باتیں تو خوب زور و شور سے ہوتی ہوں مگر عمل اس کے بالکل بر عکس و برخلاف ہوتا ہو۔ جہاں تعصب اور نفرت کی باتیں کرنے والا حق گو کہلائے اور غداری کرنے والا محافظ… یارو! مجھے لگتا ہے کہ ضرور دنیا میں،اسی دنیا میں،ہمارے اسی کرہ ارض پر، کوئی نہ کوئی ایسی جگہ، ایسا عدیم النظیر خطہ ضرور موجود ہے۔ یہ افواہیں درست ہی ہیں، میں کوشش میں لگا ہوا ہوں مگر اب تک مل نہیں پایا ہے۔ گوگل میپ بھی ٹرائی کیا، پر اس نے بھی ہاتھ اٹھا دیے اور کچھ پتہ نہیں لگ پایا۔ مگر میں ایک سچے پاکستانی کی طرح ہمت نہیں ہاروں گا ڈھونڈ کر ہی رہوں گا اس زوٹوپیا کو، سچی! … اگر آپ کو پتہ ہو تو ضروربتائیے گا مل کر وہاں گھومنے چلیں گے مگر آپ کے خرچے پر، سمجھے؟