عوام سو لفظوں کی کہانی- مبشر علی زیدی

’’برابر والی کار میں ہمارا وزیر اعظم بیٹھا ہے۔‘‘
اسٹاک ہوم میں ہمارے ڈرائیور نے بتایا۔
سگنل لال تھا۔
ہماری کار رکی ہوئی تھی۔
میں نے گردن گھما کے دیکھا،
برابر والی کار میں ایک خوش شکل آدمی بیٹھا تھا۔
نہ کوئی پروٹوکول دستہ،
نہ کوئی پولیس موبائلیں۔
کار لمبی تھی لیکن وہ خود ڈرائیو کر رہا تھا۔
میں نے تعجب کا اظہار کیا،
’’یہ کیسا وزیر اعظم ہے جو سگنل پر ٹھہرا ہوا ہے؟‘‘
سویڈش ڈرائیور نے پوچھا،
’’کیا تمہارے لیڈر سگنل پر نہیں رکتے؟‘‘
میں نے جواب دیا، ’’نہیں۔‘‘
ڈرائیور نے کہا،
’’پھر عوام بھی نہیں رکتے ہوں گے۔‘‘