سیاست سو لفظوں کی کہانی- مبشر علی زیدی

ڈوڈو کو عدالت نے نا اہل قرار دے دیا ہے۔
میں اظہار افسوس کےلئے اس کے گھر گیا۔
وہاں میلا لگا ہوا تھا۔
طفیلیے حسب معمول جمع تھے۔
’’ڈوڈو، بہت دکھ ہوا۔‘‘
میں نے کہا۔
’’ہاں یار، اچھا نہیں ہوا۔‘‘
ڈوڈو کا لہجہ زخمی تھا۔
’’یعنی اب تمہاری سیاست ختم؟‘‘
میں نے پوچھا۔
’’انتخابی سیاست۔‘‘
ڈوڈو نے تصحیح کی۔
’’کیا تم پارٹی لیڈر سے اپنی گاڑیاں اور جہاز واپس لے لو گے؟‘‘
میں نے دریافت کیا؟
’’نہیں تو۔ کیوں؟‘‘
’’کیوں کہ وہ تمہیں الیکشن کیلئے پارٹی ٹکٹ نہیں دے سکتا۔‘‘
ڈوڈو ہنسا،
’’لیکن ٹھیکے تو دے سکتا ہے۔‘‘