کیا یہ تکفیری سوچ نہیں؟ ڈاکٹر عمیر محمود صدیقی

میڈیا میں بعض لوگ یہ شکوہ کرتے نظر آئے ہیں کہ قادیانیوں کو کافر کہنا ظلم ہے۔ مولوی ہر ایک کو کافر قرار دے دیتے ہیں۔ ان کا یہ خیال صرف اسلام ہی نہیں بلکہ پاکستان کے قانون کے بھی خلاف ہے۔ یاد رکھیں اگر روئے زمین کے تمام علماء کسی کے کفر کا فتویٰ دے دیں اور وہ مسلمان ہو تو ان کا فتویٰ اس کو دائرہ اسلام سے باہر نہیں کر سکتا اور اگر کوئی کافر ہے تو کسی مفتی کا فتویٰ اسے اسلام میں داخل نہیں کر سکتا۔ مسلمانوں نے قادیانیوں کی تکفیر ضروریات دین کے انکار کی وجہ سے بعد میں کی ہے جبکہ مرزا قادیانی نے نعوذ باللہ اپنے جھوٹے دعوی نبوت کے انکار کی وجہ سے پوری امت مسلمہ کو کافر قرار دیا۔ کیا پاکستان کے لبرلز مرزا قادیانی کے پوری امت کے خلاف فتویٰ تکفیر کی مذمت کریں گے؟

مرزا نے بھی دوسرے جھوٹے مدعیان نبوت کی طرح دعویٰ کیا کہ اس پر وحی نازل ہوتی ہے اور اس کی نبوت و وحی کا انکار کرنا کفر ہے۔ مرزا نے لکھا ہے:
’’جو شخص تیری پیروی نہیں کرے گا اور تیری بیعت میں داخل نہیں ہوگا اور تیرا مخالف رہے گا، وہ خدا اور رسول کی نافرمانی کرنے والا اور جہنمی ہے۔‘‘ (تذکرہ :ص280)

مرزا ایک اور جگہ لکھتا ہے:
’’خدا تعالیٰ نے میرے پر ظاہر کیا ہے کہ ہر ایک شخص جس کو میری دعوت پہنچی ہے اور اس نے مجھے قبول نہیں کیا، وہ مسلمان نہیں ہے اور خدا کے نزدیک قابل مؤاخذہ ہے۔‘‘ ( تذکرہ :ص519)

مرزا کے مرید اس پر کس طرح سے کفریہ اعتقاد رکھتے تھے، اس کا اندازہ مرزا کے خلیفہ حکیم نور الدین کی اس بات سے لگایا جا سکتا ہے:
’’یہ تو صرف نبوت کی بات ہے، میرا تو ایمان ہے کہ اگر مسیح موعود صاحب شریعت نبی ہونے کا دعویٰ کریں اور قرآنی شریعت کو منسوخ کر دیں تو پھر بھی مجھے انکار نہ ہو کیونکہ جب ہم نے آپ کو واقعی صادق اور من جانب اللہ پایا ہے تو اب جو بھی آپ فرمائیں گے وہی حق ہوگا اور ہم سمجھ لیں گے کہ آیت خاتم النبیین کے کوئی اور معنی ہوں۔‘‘ (سیرت المہدی حصہ اول،جلد اول ص:88)

یہ بھی پڑھیں:   انا خاتم النبیین لا نبی بعدی - ڈاکٹر میمونہ حمزہ

مرزا قادیانی نے اپنے تمام منکرین کو فاحشہ عورتوں کی اولاد کہا ہے۔ آئینہ کمالات اسلامیہ میں ہے:
تلک کتب ینظر الیھا کل مسلم بعین المحبۃ و المودۃ و ینتفع من معارفھا و یقبلنی و یصدق دعوتی الا ذریۃ البغایا الذین ختم اللہ علی قلوبھم فھم لا یقبلون(آئینہ کمالات اسلام ص:548/روحانی خزائن جلد نمبر 5)
میری ان کتابوں کو ہر مسلمان محبت اور مودت سے دیکھتا ہے، اور ان کے معارف سے فائدہ اٹھاتا ہے۔ مجھے قبول کرتا ہے اور میرے دعوے کی تصدیق کرتا ہے۔ سوائے فاحشہ عورتوں کی نسل کے جن کے دلوں پر اللہ نے مہر لگا دی ہے۔ پس وہ قبول نہیں کرتے۔

Comments

ڈاکٹر عمیر محمود صدیقی

ڈاکٹر عمیر محمود صدیقی

ڈاکٹر عمیر محمود صدیقی شعبہ علوم اسلامیہ، جامعہ کراچی میں اسسٹنٹ پروفیسر اور کئی کتابوں کے مصنف ہیں۔ مختلف ٹی وی چینلز پر اسلام کے مختلف موضوعات پر اظہار خیال کرتے ہیں۔ علوم دینیہ کے علاوہ تقابل ادیان، نظریہ پاکستان اور حالات حاضرہ دلچسپی کے موضوعات ہیں

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں