پسنی آرٹ کی سرزمین - ظریف بلوچ

بحیرۂ عرب کے کنارے واقع پسنی بلوچستان کا اہم ساحلی شہر ہے اور یہاں کے زیادہ تر لوگوں کا واحد ذریعہ معاش سمندر ہی سے جڑا ہے لیکن پسنی کی ایک اور وجہ شہرت بھی ہے، فن و ادب کے حوالے سے یہ 'بلوچستان کا لکھنؤ' کہلاتا ہے۔ بلوچ ادب کے زیادہ تر بڑے نام مچھیروں کی اسی قدیم بستی سے سامنے آئے۔ آج بھی پسنی کے نوجوانوں کو آرٹ اور ادب سے خاص لگاؤ ہے اور بغیر کسی سپورٹ کے پورے ذوق و شوق کے ساتھ ان سے وابستہ ہیں۔ شاید اس لیے کہ فن و ادب انہیں وراثت میں ملا ہے۔

ہاشم عثمان نوجوان مصور ہیں، آرٹ کو جذبات کی بہترین عکاسی سمجھتے ہیں اور ان کے خیال میں آرٹسٹ منظر کو نفسیاتی تناظر میں اپنے فن پارے میں محفوظ کرتا ہے۔ ایک اور آرٹسٹ صمد عبد اللہ کے خیال میں اگر فن کار کی سوچ مثبت ہو تو یہ معاشرے کی سوچ میں نمایاں ہوتی ہے کیونکہ یہ آرٹسٹ ہی ہوتا ہے جو اپنی تخلیق کے ذریعے معاشرے کی ترجمانی کرتا ہے۔

لیکن مسئلہ یہ ہے کہ فن مصوری ایک مہنگا شوق ہے اور بلوچستان میں بالعموم، اور پسنی میں بالخصوص، نوجوانوں کی اتنی سکت نہیں کہ وہ مہنگا آرٹ مٹیریل خرید سکیں۔ بدنصیبی یہ ہے کہ ہمارے معاشرے میں آرٹسٹ کی سوچ کو اتنی اہمیت بھی نہیں دی جاتی، جس کا وہ حقدار ہوتا ہے۔

بہرحال، آرٹ کو ذریعہ اظہار تو چاہیے، اس کی اپنی زبان ہوتی ہے اور علامات کے ذریعے اس زبان کی عکاسی بھی کرتا ہے۔ یہ آرٹسٹ کی طرف سے معاشرے کے لیے ایک پیغام ہوتا ہے اور سینئر صحافی اور آرٹسٹ اکرم صاحب خان کے مطابق دنیا کی سب سے بڑی مصوری ہے۔ گو کہ ہمارے معاشرے میں آرٹ میں زیادہ دلچسپی نہیں لی جاتی، لیکن یہ شوق ہوتا ہے تو ایسے لوگوں کو آرٹ سے وابستہ کرتا ہے۔ ان کے خیال میں ہر فن پارہ کل کی امیدوں کا عکاس ہوتا ہے۔

آرٹ ادب، اور موسیقی کے حوالے سے پسنی بلوچستان میں ایک مقام تو رکھتا ہے لیکن مقامی ادیب کامران اسلم کا کہنا ہے کہ بدقسمتی سے لوگ مصوروں کے فن پاروں پر زیادہ توجہ نہیں دیتے۔ ایک وجہ تو فنی شعور کی کمی ہے پھر دنیا بھی آرٹ میں جدت اختیار کرگئی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ یہاں کے نوجوان سینڈ آرٹ کی طرف جا رہے ہیں جو فن مصوری کی ایک جدید شکل ہے۔ بغیر تربیت اور کسی سپورٹ کے سمندری ریت سے مجسمے بنانا ایک کمال ہے جس میں پسنی کے نوجوانوں کی مہارت حیرت انگیز ہے۔ اگر ان نوجوانوں کو مدد فراہم کی جائے تو یہ اس پسماندہ علاقے میں امید کی نئی کرن پیدا کر سکتے ہیں اور امید کی روشنی سے بڑھ کر کیا ہو سکتا ہے؟

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com