سالگرہ مبارک دلیل - سخاوت حسین

دلیل کو ایک سال ہوگیا، جیسے ہی یہ سنا یقین ہی نہیں آیا. ایک سال میں اتنی زیادہ کامیابیاں، شاید واحد ویب سائٹ اور پیج ہے جس نے ایک سال میں اتنی زیادہ کامیابیاں کمائی ہوں۔ ایک شخص اٹھا، ستائیس رمضان کو ایک ویب سائٹ کی بنیاد رکھی اور کہا یہاں ہر بات دلیل سے ہوگی۔ پھر لوگوں نے دیکھا کہ اس شخص نے ایک سال میں دلیل کو صف اول کی آن لائن ویب سائٹ میں لا کھڑا کیا۔ جہاں ہر لکھنے والے کو لکھنے کا موقع دیا گیا۔ ہر ایک کو اظہار رائے کی آزادی دی گئی۔ جہاں پسند نا پسند کی بنیاد پر تحاریر کی اشاعت کو نہیں دیکھا گیا، بلکہ میرٹ کی بنیاد پر تحاریر شائع کی گئیں اور پڑھنے والوں نے بھی میرٹ کو ہی بنیادی اصول سمجھا۔ مجھے یاد ہے کچھ مہینہ پہلے ایک دن بیٹھے بیٹھے ایک تحریر دلیل کو بھیجی تھی۔ سوچ یہی تھی کہ ایک آن لائن ویب سائٹ ہے، شائع ہو جائے۔ تین چار دن میں ہی پہلی تحریر دلیل پر شائع ہوئی۔ جب میں نے دلیل پر لکھنا شروع کیا تب فیس بک پر دلیل محبین کی تعداد چالیس ہزار کے نزدیک تھی۔ کسی بھی بلاگ کا اتنی جلدی ترقی کر جانا واقعی قابل فخر بات ہے۔ آج دلیل کے محبین کی تعداد ایک لاکھ سے تجاوز کر چکی ہے۔

الحمدللہ آج میں دلیل پر باقاعدہ لکھ رہا ہوں اور ہر طرح کی تحریر لکھ رہا ہوں۔ جس میں افسانے، کالمز اور تحقیقی مضامین شامل ہیں۔ مجھے فخر محسوس ہوتا ہے کہ میں دلیل کا لکھاری ہوں، دلیل پر لکھتا ہوں، کیونکہ میں دلیل پر یقین رکھتا ہوں۔ دلیل کو ہی سب سے بڑی گفتگو کی دلیل سمجھتا ہوں۔ دلیل مجھے اس لیے پسند ہے کیوں کہ یہاں ہر قسم کے معاشرتی اور سماجی مسائل پر دلیل کے ساتھ بحث کی جاتی ہے۔ یہاں میں نے دلیل محبین کو مخلتف لکھاریوں سے اختلاف کرتے ہوئے بھی دیکھا ہے۔ کالمز کے رد میں کالمز بھی لکھے گئے ۔ ایسا لازمی نہیں کہ کسی ایک شخص کا مؤقف زبردستی پیش کیا گیا ہوا اور اس کے رد کو جگہ نہ دی گئی ہو۔ جبکہ کچھ بلاگ پر ایسا ہوتا ہوا دیکھا ہے میں نے۔

دلیل مجھے اسی لیے پسند ہے کیوں کہ دلیل پر احساسات کو خوبصورت زباں دی جاتی ہے۔ جتنی اہمیت کالمز اور دیگرصحافتی اصناف کو دی جاتی ہے اتنی اہمیت ادبی اصناف کو بھی دی جاتی ہے۔ اسی لیے دلیل پر ایک کثیر تعداد ادبی لکھاریوں کی بھی ہے۔ جو افسانے، مختصر کہانیاں اور افسانچے لکھ رہے ہیں۔ جس کو نہ صرف شائع کیا جاتا ہے بلکہ ایک کثیر تعداد پڑھتی بھی ہے جو کہ اردو ادب کے لیے ایک خوش آئند بات ہے۔

مجھے امید ہے دلیل اسی طرح ہر شخص خواہ وہ کسی بھی قبیلے سے تعلق رکھتا ہے، اس کا مؤقف غیرجانبداری سے پیش کرتی رہے گی۔ دلیل اسی طرح تمام ادبی اصناف کو بھی پہلے سے زیادہ اہمیت دے گی، اور کوشش کرے گی کہ زیادہ سے زیادہ معاشرتی اور سماجی مسائل کو اپنا نقطہ نظر بنائے اور کوشش کرے کہ ان موضوعات پر زیادہ سے زیادہ تحاریر شائع ہوں۔

میں پہلی سالگرہ پر عامر ہاشم خاکوانی بھائی، دانیال بھائی اور دلیل کی دیگر ٹیم، تمام لکھاریوں اور محترم پڑھنے والوں کی خدمت میں دلیل کی پہلی سالگرہ پر بہت سی محبتیں پیش کرتا ہوں۔ ایک سال پہلے ایک شخص نے ویب سائٹ کی بنیاد رکھی، جو آج وہ پودا تناور درخت بن چکا ہے جو کہ اس کی محنت کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ اللہ سے دعا ہے کہ وہ دلیل کو مزید ترقیاں اور کامیابیوں سے نوازے۔ آمین

Comments

سخاوت حسین

سخاوت حسین

سخاوت حسین نے پولیٹیکل سائنس میں ماسٹر کیا ہے، دل میں جہاں گردی کا شوق رکھتے ہیں، افسانہ، سماجی مسائل اور حالات حاضرہ پر لکھنا پسند ہے۔

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.