گائے کے قاتل کون؟ ڈاکٹر رضی الاسلام ندوی

آج کل پورے ملک میں گو رکھشکوں کا آتنک جاری ہے. وہ گائے کے ساتھ کسی کو دیکھ لیں تو بس یہ سمجھ لیتے ہیں کہ وہ اس کا گوشت کھانے کے لیے اسے لے جا رہا ہے. بس اس پر اتنا تشدد کرتے ہیں کہ بسا اوقات وہ جان سے ہاتھ دھو بیٹھتا ہے. ان کے آتنک سے وہ لوگ بھی محفوظ نہیں ہیں جو ڈیری چلاتے اور دودھ کا کاروبار کرتے ہیں، حتّی کہ وہ دلت بھی ان سے دردناک سزا پاتے ہیں جو مردہ گائے کی لاش کو اٹھاتے اور اسے ٹھکانے لگانے کے لیے لے جاتے ہیں. پھر اگر گائے کے ساتھ کوئی مسلمان ہو یا مسلمان جیسی صورت رکھتا ہو تب تو ان گو رکھشکوں کے نزدیک اسے جینے کا حق نہیں. وہ فورا اس کے لیے سزائےموت کا فیصلہ صادر کردیتے ہیں. کسی نے صحیح تصویر کشی کی ہے:
شیر آگے سے گزر جائے تو کوئی بات نہیں
گائے پیچھے سے گزر جائے تو ڈر لگتا ہے

حقیقت یہ ہے کہ گائے کے قاتل مسلمان نہیں. اب بھی دیہاتوں اور قصبات میں، جہاں ملک کی تین چوتھائی آبادی رہتی ہے، بغیر کسی تفریق کے ہندو مسلم سب گائے پالتے ہیں، اور اس کے دودھ سے فائدہ اٹھاتے ہیں. ایسا بھی نہیں کہ مسلمانوں کے لیے گائے کا گوشت کھانا ان کے مذہب میں لازم ہو، جس کے بغیر ان کا ایمان معتبر نہ ٹھہرتا ہو. ایسے بےشمار مسلمان ہیں جنھوں نے زندگی بھر کبھی گائے کا گوشت نہیں کھایا ہے.

گائے کے قاتل وہ ہیں جو اس کی جوانی میں اس کے دودھ کی بوند بوند چوس لیتے ہیں، لیکن بعد میں اس کے چارے کی ذمے داری نہیں اٹھاتے، اور اسے در بدر مارے مارے پھرنے کے لیے ہانک دیتے ہیں.
گائے کے قاتل وہ ہیں جو ایک طرف کچھ ریاستوں میں اس کی محبت کا دم بھرتے اور اس کے تقدس کی مالا جپتے ہیں، لیکن اپنی زیرانتظام دیگر ریاستوں میں انھوں نے گائے کے ذبیحہ کی کھلی چھوٹ دے رکھی ہے.
گائے کے قاتل وہ ہیں جنہوں نے اس کے شیلٹر ہاؤس کھول رکھے ہیں، لیکن وہاں اسے بھوکا مارتے ہیں اور اس کے چارہ کے نام پر حکومت سے ملنے والے کروڑوں روپے بغیر ڈکار لیے ہضم کرجاتے ہیں.
گائے کے قاتل وہ ہیں جو بیف ایکسپورٹ کی بڑی بڑی کمپنیوں کے مالک ہیں، جن سے ان کا کاروبار دن دونی رات چوگنی ترقی کر رہا ہے اور وہ ان سے سالانہ اربوں روپے منافع کما رہے ہیں.
گائے کے قاتل وہ ہیں جو چمڑے کی بڑی بڑی فیکٹریوں کے مالک ہیں اور جن کی ٹینریوں میں دن رات کام ہوتا ہے.

اگر حکومت واقعی گائے سے دل سے محبت کرتی ہے تو وہ
* گائے کے ذبیحہ پر ملک کی تمام ریاستوں میں پابندی کیوں عائد نہیں کرتی؟
* چارہ گھوٹالہ میں کروڑوں روپے ہضم کرنے والوں کو پھانسی پر کیوں نہیں چڑھاتی؟
* بیف ایکسپورٹ کی تمام کمپنیوں کے لائسنس منسوخ کر کے ان پر پابندی کیوں نہیں عائد کر دیتی؟
* لیدر پروڈکس کو بین کرکے ٹینری کی فیکٹریوں کو کیوں سیل نہیں کردیتی؟
کیوں؟
کیوں؟
کیوں؟

Comments

ڈاکٹر رضی الاسلام ندوی

ڈاکٹر رضی الاسلام ندوی

محمد رضی الاسلام ندوی نے ندوۃ العلماء لکھنؤ سے فراغت کے بعد علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے BUMS اورMD کیا. ادارہ تحقیق و تصنیف اسلامی ہند کے رفیق رہے. سہ ماہی تحقیقات اسلامی کے معاون مدیر اور جماعت اسلامی ہند کی تصنیفی اکیڈمی کے سکریٹری ہیں. قرآنیات اور سماجیات ان کی دل چسپی کے خاص موضوعات ہیں. عرب مصنفین کی متعدد اہم کتابوں کا اردو میں ترجمہ کیا ہے

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com