جھوٹ - ریاض علی خٹک

زبان تو جانوروں کے پاس بھی ہوتی ہے. اس زبان کو انہوں نے محدود کردیا، یہ زبان وہ اپنی ذات کے دکھ درد یا خوشی و خواہش کے اظہار تک ہی استعمال کرتے ہیں. اس میں دوسرے کو صرف بتانا ہوتا ہے. اس سے منوانا نہیں، کیونکہ ان کے قانون بھی سادہ ہیں. منوانے کے لیے یا طاقت استعمال ہوتی ہے یا محبت. تو جانور جھوٹ نہیں بولتے.

انسان بھی زبان لے کر آیا، اس زبان کے صوتی اثرات و آوازوں کو اس نے الگ ہی زبان بنا دیا. قدیم انسان نے سوچا یہ لایعنی آوازوں کو مشترکہ کیوں نہ کردیا جائے. وہ مشترک آوازیں جن پر سب کا اتفاق ہو، تو ہر چیز کو ایک نام دے دیا، اسے پہچان دے دی. اپنے جذبات و خواہشات کو بھی لفظ دے دیے. آج درد کا اظہار ہو کہ خوشی کی مبارکباد، ہم ان لفظوں سے دوسرے کا درد بانٹ بھی سکتے ہیں, اور اپنی خوشی میں دوسرے کو شامل کر بھی سکتے ہیں.

انسان نے ان لفظوں کی نہ صرف ادائیگی مشترک کی بلکہ ان کو تحریر بھی کیا. ہم نے اس زبان کو جیسے صوتی تاثرات سے پہچان دی. ایسے ہی کچھ نقش تراش کر ان کو ہر صوتی تاثر کی پہچان بنا کر اسے محفوظ بھی کرلیا. یہ سب نسلوں کا ارتقائی سفر تھا. جس نے ہمھیں علم کی معراج دی. یہی خوبی ہے کہ انسان اشرف المخلوقات ہے. اظہار و عمل کی یکجائی ہی ہمارا شرف بنا.

یہ پہچان چاہے لفظ کی ہو یا تحریر کی، یہ محتاج ہے دوسرے انسان کے اعتماد کی. صدیوں کے اس سفر میں انسان کی بقا اسی باہمی اعتماد پر ممکن ہوئی. یہی اعتماد اپنی کیفیت کے اظہار کی ضمانت ہے. جھوٹ دھوکا ہے. یہ کسی اظہار کی وہ تشریح ہے جہاں ہم جانتے بوجھتے وہ لفظ بول یا لکھ لیتے ہیں جس سے کسی احساس و عمل کی غلط تعبیر و ترسیل ہوجاتی ہے.

ہم آج بھی اجنبی زبان میں جھوٹ نہی بول سکتے. نہ ہم ناآشنا تحریر میں جھوٹ تراش سکتے ہیں. جھوٹ کے لیے ہمیں اس زبان کی ضرورت ہے جو دوسرے ہم زبان کے اعتماد پر قائم ہے. یہ جھوٹ اعتماد کی اس فصیل میں دراڑیں ڈالتی ہے. جھوٹ جب عام ہوجائے تو اعتماد پر قائم اس شہر کی فصیلیں گر جاتی ہیں. اور بنا فصیل کے شہر زیادہ دیر تک قائم نہیں رہ پاتے. یہ سبق بھی ہمیں اسی تاریخ کے تواتر سے ملا جس تاریخ سے جھوٹ کہنے کے لیے ہم نے زبان لی.

Comments

ریاض علی خٹک

ریاض علی خٹک

ریاض علی خٹک خیبر پختونخوا کے کوہساروں سے روزی روٹی کی مشقت پر سندھ کے میدانوں میں سرگرداں, تعلیم کیمسٹ کی ہے. تحریر دعوت ہے.

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.