دو قومی نظریہ، زندہ یا مردہ؟ سنگین زادران

آج کل اکثر کہلانے کی حد تک دانشوران کے منہ سے دو قومی نظریہ پر شیر خوارانہ غوائیں غوائیں سننے کو ملتی ہے۔

اس میں بحث کی گنجائش ہی کیا ہےکہ دو قومی نظریہ زندہ ہے یا نہیں؟ عزازیل فرشتوں کا استاد تھا مگر قاعدے سے ہٹا تو الگ قوم قرار دیا گیا۔ نوح علیہ السلام کا بیٹا خون میں سگا تھا، نظریے کی بنیاد پہ الگ ٹھہرا۔ ابراہیم علیہ السلام کا والد ان کا رشتہ دار تھا، نظریہ الگ ہوا تو الگ قوم سے ہو گیا۔ لوط علیہ السلام کی بیوی ان کی رشتہ دار تھی، نظریہ الگ ہونے کی بنا پر الگ قوم میں شمار کی گئی اور معتوب ٹھہری۔ فرعون کی بیوی آسیہ نظریہ الگ ہونے پر فرعون کی قوم سے بروئے قرآن الگ شمار ہوئی ہیں۔

نسل در نسل اور صدیوں پہ محیط عرصے کےلیے ساتھ رہنے والے عرب الگ قوموں میں بٹ گئے، ایک مسلمانوں کی قوم ایک مشرکین کی قوم۔ ابوبکر صدیق رض کے بیٹے نے قبول اسلام سے قبل کہا کہ ابا ایک جنگ کے موقع پر آپ میری تلوار کی زد میں تھے مگر میں نے ہاتھ کھینچ لیا۔ جوابا ابوبکر صدیق رض نے فرمایا: بیٹا اگر تمہاری گردن میری تلوار کی زد میں ہوتی تو خدا کی قسم میں اڑا دیتا، ہاتھ نہ کھینچتا۔

خود کو راجہ داہر کی اولادیں قرار دے کر اپنا نسبی تعلق ہندوؤں تو کبھی سکھوں سے جوڑنے والے مسلمان قرآنی حکم ’’ملت ابیکم ابراھیم ھو سماکم المسلمین‘‘ کیوں بھول جاتے ہیں؟ جب اللہ کہہ رہا ہے کہ تم اپنے باپ ابراھیم کی ملت سے ہو اور تمہارا نام مسلمان رکھا گیا ہے تو پیچھے گنجائش ہی نہیں بچتی کہ انسان اپنا تعلق جنابِ ابراھیم علیہ السلام سے توڑ کر راجہ داہر سے جوڑے۔ کیا ہجرتِ مکہ سے بڑی بھی کوئی دلیل ہو سکتی ہے دو قومی نظریہ پر؟

یہ بھی پڑھیں:   اب مسلم کے معنی بھی تبدیلی کی نظر - اسماء اشفاق

سیکولرازم کے دماغی مریضوں کے کانوں میں صور پھونکا جاتا ہے کہ جب جب کوئی ہندو مسلمان عورتوں کو قبروں سے نکال کر زنا کی دھمکی دیتا ہے، جب جب کوئی ہندو گائے ذبح کرنے کے شبہ میں مسلمانوں کو ذبح کرتا ہے تو دو قومی نظریہ تمہارے نظریات کی تعفن زدہ لاش کے مقبرے پر ٹھوکر مار کے پوچھتا ہے ’’جواب دو، میں دو قومی نظریہ مر چکا ہوں یا زندہ ہوں؟‘‘

Comments

سنگین زادران

سنگین زادران

سنگین زادران خود کو ایک عام پاکستانی سمجھتے ہیں جو نظریہ پاکستان کے دفاع پاکستان کے دفاع کے برابر خیال کرتا ہے اور جدت میں روایت کو ساتھ لے کر چلنے کو بدعت خیال نہیں کرتا۔

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.