منہ کی فائرنگ سے انقلاب - زبیر منصوری

باتیں، الزامات، پوسٹس، پکچرز، الٹی سیدھی میڈیا کمپینز، کرپشن کے الزامات، اپنی پارسائی اور دوسرے کوعبرتناک سزا کے مطالبے، بھاشن کروڑوں کے، دکان پکوڑوں کی بھی نہیں!

بھلا بتائیں!
کس کے پاس Given situation میں کوئی ٹھیک، بڑا، قابل عمل، ذہانت کے ساتھ حقیقی عملی حالات سے Drive کیا ہوا کوئی پچاس سالہ نہ سہی، پانچ سالہ ہی سہی، وژن موجود ہے؟
کس کے پاس عالمی منظر نامے کی تہہ در تہہ باریکیوں کو سمجھنے والے ماہرین موجود ہیں؟
کس کے پاس ان عالمی حالات میں رہتے ہوئے ماضی کے تجربات کو سامنے رکھ کر اپنے ملک کے لیے کوئی سوچا سمجھا خاکہ ہے؟
کس نے ملک کے حقیقی سیاسی سسٹم Political fabric کو سمجھا ہے؟
کسے معلوم ہے کہ اس وقت ملک میں کتنی مختلف سیاسی بیلٹ ہیں، ان میں کس کو کس طرح ایڈریس کیا جائے تو نتائج نکل سکتے ہیں؟
کس کے پاس ڈیٹا کی بنیاد پر Prediction کا کوئی ذیشان عثمانی جیسا آدھا ماہر بھی موجود ہے؟
کس کے پاس رجحانات، خیالات، پسند ناپسند، دلچسپیاں، اقدار وغیرہ کا کوئی آدھا پونا ڈیٹا ہے جس سے حالات کو سمجھ کر Data driven decision لیے جا سکتے ہوں؟
کس کے پاس ٹھیک پیغام، اسے ٹھیک ٹولز کے ساتھ ٹھیک آڈینس کے لیے ٹھیک فریکوینسی کے ساتھ بھیجنے والے ماہرین موجود ہیں ؟
کس کے پاس صالحیت اور صلاحیت رکھنے والے وافر ہیومن ریسورس، اس کی ٹریننگ، مانیٹرنگ، اور اسے مسلسل بہتر بنانے کا نظام موجود ہے؟
کس کے پاس منصوبوں کو پوری قوت اور روح کے ساتھ عمل میں ڈھال دینے والے لوگ دستیاب ہیں؟
کون اپنے وژن اور کل کے لیے اپنے آج کو قربان کرنے، بدلنے اور ٹرانسفارم کرنے کو تیار ہے؟
کس کے پاس ان کاموں کے لیے درکار وافر وسائل، ان کی مسلسل فراہمی کے چینلز، درست، نتیجہ خیز، اسٹریٹیجک استعمال کے سوچے سمجھے خاکےموجود ہیں؟

یاد رکھیے!
یہ دنیا دارالاسباب ہے، یہاں منہ کی فائرنگ پائیدار نہیں رہتی، اس سے انقلاب نہیں آتا. یہاں اللہ کی مدد بھی بس اس وقت آتی ہے، جب آپ خود کو اہل تر ثابت کر دیتے ہیں!
(پلاننگ کو بےکار کا کام سمجھنے والوں کے حملوں کے لیے میں نے احتیاطا ہیلمٹ پہن لیا ہے?)

Comments

زبیر منصوری

زبیر منصوری

زبیر منصوری نے جامعہ منصورہ سندھ سے علم دین اور جامعہ کراچی سے جرنلزم، اور پبلک ایڈمنسٹریشن کی تعلیم حاصل کی، دو دہائیاں پہلے "قلم قبیلہ" کے ساتھ وابستہ ہوئے۔ ٹرینر اور استاد بھی ہیں. امید محبت بانٹنا، خواب بننا اوربیچنا ان کا مشغلہ ہے۔ اب تک ڈیڑھ لاکھ نوجوانوں کو ورکشاپس کروا چکے ہیں۔

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */