ابلیس اور لبرل ازم - عاشورعاصم

ہمارے لبرل حضرات بھی کمال کے ہیں۔ اپنے لبرل خیالات کا پرچار کم اور دوسروں کے عقیدے پر ٹونٹ، طنز اور مضحکہ خیز تبصرے زیادہ کرتے ہیں۔ خود کو منوانے کے بجائے دوسروں کو نیچا دکھانے کی دھن سر پر سوار رہتی ہے۔ اپنے نظریات میں اس قدر سفاک اور انتہا پسند ہیں ہیں کہ لگتا ہے وہ وقت دور نہیں، جب یہ بھی اسلام اور پاکستان کا نام لینے والوں کی گردنیں کاٹنے لگیں گے۔
.
ابھی کچھ دنوں سے ناجانے کیا ہوا، ہمارے سب قومی بے ہدایتے ابلیس کے پیچھے پڑ گئے ہیں۔ کوئی ابلیس کو کائنات کا پہلا لبرل اور اختلاف کرنے والا کہہ رہا ہے تو کوئی خدا کو مکالمے کا بانی قرار دے رہا ہے۔ قصہ مختصر کہ ایک بدتہذیبی کا دور دورہ ہے جس میں علم و دانش ناپید ہے اور تعمیری فکر راندہِ درگاہ۔ تو ہم نے سوچا کہ کیوں نہ ہم بھی ابلیس پر کچھ طبع آزمائی کریں۔ تو پیش خدمت ہے ہماری طبع آزمائی۔!
.
اللہ نے فرشتوں کو سجدہ کرنے کا حکم دیا تو سوائے ابلیس کے سبھی نے سجدہ کیا جب اللہ نے دریافت کیا تو میری چشمِ غیب نے کچھ یوں دیکھا کہ شیطان کہنے لگا کہ اے پروردگار بھلا یہ کہاں پر لکھا ہے کہ میں مٹی کے پتلے کو سجدہ کروں؟ نہ تو اس کا ذکر کہیں کسی حوالے میں ہے اور نہ ہی قائداعظم نے کبھی اپنی تقریر میں کیا۔ یہ سب باتیں تو پاکستان بننے کے بعد مولویوں کی گھڑی ہوئی ہیں۔ اے میرے پاک پروردگار! اس انسان کو مطالعہ پاکستان سے باہر نکالیں کیونکہ اس میں صرف جھوٹ لکھا ہوا ہے۔
.
اس قدر بد تہذیبی اور بدتمیزی کے بعد آسمان پر مشہور ہو گیا کہ ابلیس لبرل ہوگیا ہے کیونکہ اس نے خالق کے سامنے بدتمیزی کی اور حکم کے سامنے رائے کا اظہار کیا۔ جبکہ نادان نہیں جانتا کہ حکم کے سامنے سرتسلیمِ خم کیا جاتا ہے، رائے نہیں دی جاتی۔ جس پر اسے آسمانوں سے چلے جانے کا سندیس ملا اور انت میں دوزخ کی نوید سنا دی گئی لیکن ابلیس یہ جانتے بوجھتے کہ وہ غلط ہے، سرکش ہے، بھٹکا ہوا ہے اور اس کا ٹھکانہ جہنم ہے، لیکن وہ پھر بھی لوگوں کو یہی کہہ رہا ہے کہ اچھا حوالہ دو، کہاں لکھا ہے؟ یہ بات تو قائداعظم نے 11 اگست والی تقریر میں کی ہی نہیں تھی، فلاں روایت تو غلطی سے حدیث میں شامل ہو گئی، فلاں خرافات تو پاکستان بننے کے بعد مولویوں نے شامل کیں۔
.
لگتا ہے ابلیس نے آسمان بدر ہونے کے بعد اپنا مستقل ٹھکانہ پاکستان کو بنا لیا ہے۔ اللہ ہم کو ابلیس کی لبرل بدتمیزیوں اور انتہا پسندیوں سے محفوظ رکھے، اور اس کے چیلوں کو ہدایت کی راہ دکھائے۔ آمین