دیکھو - زبیر منصوری

دیکھو!
ہے جرم ضعیفی کی سزا مرگ مفاجات
جہاں کمزور پڑے، وہیں مار کھاؤ گے۔
جہاں اقدام نہیں کرنا سیکھو گے، وہیں اپنے دفاع میں سامنے والے سے پیچھے رہ جاؤ گے

دیکھو!
آج خوگر حمد سے تھوڑا سا گلہ بھی سن لو
کمزوری صرف قوت بازو کی کمزوری نہیں ہوتی، یہ تو اب پرانے زمانے کی بات ہو گئی، کمزوری تو کمیونیکیشن، پلاننگ اور offence is the best defence میں کمزور رہ جانےکا نام ہے۔

دیکھو!
اپنی والز پر، اپنوں ہی کے سامنے، اپنی ہی باتیں، خود ہی کمنٹس، خود ہی لائیکس، خود ہی پوسٹس یہ سب بس دائرے کا سفر ہے، بے فائدہ سا کام ہے۔
یہاں برا وہ نہیں جو برا ہے بلکہ وہ ہے جسے برا ثابت کر دیا جائے۔

دیکھو!
بھیڑیے خطرناک ہوتے ہیں مگر جن بھیڑیوں کو تم نے زخمی کر کے چھوڑ دیا ہو، وہ زہر ناک بھی ہو جاتے ہیں اور خون خوار بھی.
میڈیا اور معاشرے میں ایسے بہت سے ہیں جن کے گناہوں سے رستے تمہارے دیے زخموں کا گند انہیں کچھ نہ کچھ اگلنے پر مجبور کرتا رہتا ہے.

دیکھو!
دنیا تبدیل ہو چکی مگر افسوس تمہیں شاید اس کی خبر نہیں ہوئی، یہ دنیا اب بس ان کی ہے جو آگے بڑھ کر مجاہد کامران اور ثناءاللہ جیسوں کو حیران کر سکتے ہوں، نئے اور کری ایٹو آئیڈیاز سے ان کے اگلے منصوبوں کو فلاپ کر دینے کی منصوبہ بندی رکھتے ہوں، انھیں ساری دنیا کی طرح Carrit and stick سے ’’میڈیا منیجمنٹ‘‘ آتی ہو، انہیں اپنے اچھے کو بہت اچھا اور بہت بڑا کر کے اور اپنے برے کو بالکل غائب یا محدود کرنا آتا ہو.

دیکھو!
یہ دنیا ریالٹی سے زیادہ پرسیپشن منیجمنٹ کی دنیا ہے۔

دیکھو!
اب وہ زمانہ لد گیا جب تم والینٹیرز سے سارے کام لیتے تھے، اب تو کچھ شعبے More then full time job ہیں، اب اگر پرانے ہتھیاروں سے نئی جنگیں لڑنے جاؤ گے تو منہ کی کھاؤ گے. (خدا نخواستہ)

دیکھو!
اب لڑائیاں وہ جیتیں گے جن کی ٹائمنگ ٹھیک ہوگی، جو خود دشمن کے میدان میں نہیں جائیں گے بلکہ اسے اپنے میدان میں کھینچ لائیں گے.

دیکھو!
ترکی، اخوان، مراکش اور تیونس کے پاس تمہیں سکھانے کو بہت کچھ ہے.

دیکھو!
اس میں کوئی شبہ نہیں کہ تم اپنی تمام تر خامیوں کے باوجود زمین کے قیمتی ترین لوگ ہو، تمہارا تصور اسلام ان ظاہر داروں سے بہت بہتر ہے، یہ شرعی فیشن کو دین سمجھنےاور تقوی کے تکبر کا شکار رہنے والوں سے تم جینز اور ٹی شرٹ والے ان شاءاللہ اللہ کی نظر میں قیمتی قرار پاؤ گے۔

دیکھو!
کچھ خول توڑو، تمھیں تمھارے رسول کے دین کی حرمت کا واسطہ، اپنی بنائی روایات پر اللہ کے دین کی ضروریات کو ترجیح دو.
اٹھو دوڑو نکلو
زمانہ چال قیامت کی چل گیا۔

Comments

زبیر منصوری

زبیر منصوری

زبیر منصوری نے جامعہ منصورہ سندھ سے علم دین اور جامعہ کراچی سے جرنلزم، اور پبلک ایڈمنسٹریشن کی تعلیم حاصل کی، دو دہائیاں پہلے "قلم قبیلہ" کے ساتھ وابستہ ہوئے۔ ٹرینر اور استاد بھی ہیں. امید محبت بانٹنا، خواب بننا اوربیچنا ان کا مشغلہ ہے۔ اب تک ڈیڑھ لاکھ نوجوانوں کو ورکشاپس کروا چکے ہیں۔

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.