آزمائش تو آئے گی - نیر تاباں

آزمائش تو آئے گی. کوئی زوج سے آزمایا جائے گا، کوئی اولاد سے، کوئی مال و دولت سے.. آزمائش تو آئے گی!
اب یا تو تمام تر دوسری نعمتوں کو چھوڑ کر اس ایک مشکل کی طرف دیکھ کر روتے رہیں، یا اپنا فوکس تھوڑا تبدیل کریں.

بابا اشفاق احمد ذکر کرتے ہیں کہ ایک بار اپنے پوتے کو کھڑکی سے باہر دکھا رہے تھے لیکن بچے کی نگاہ باہر کے منظر کے بجائے کھڑکی کے شیشے پر ٹکی تھی جہاں ایک مری ہوئی مکھی چپکی ہوئی تھی. زندگی آج بھی اپنی تمام رعنائیوں کے ساتھ ہمارے سامنے موجود ہے. یہ ہم پر منحصر ہے کہ ہم باہر نیلا کھلا آسمان دیکھنا چاہتے ہیں، سبز گھاس پر چمکتے شبنم کے قطرے، ٹہنیوں پر چہچہاتے پرندے... یا پھر نگاہ اس ایک چیز پر مرکوز رکھنا چاہتے ہیں جو ہمیں پسند نہیں.
اپنے آپ کو لوگوں کے رویوں سے بالا کر لیں. جب آپ زمین پر کھڑے ہو کر دیکھیں تو منظر اور ہوتا ہے ، جب آپ دوسری منزل پر سے دیکھیں تو ایک اور زاویے سے دیکھتے ہیں. اور اوپر چلے جائیں، جہاز میں بیٹھ کر نیچے دیکھیں تو بالکل مختلف نظارہ ہوگا. بڑے بڑ ے 18-wheelers اب کسی کھلونے جتنے دکھائی دیں گے، کئی منزلہ عمارتیں ماچس کی ڈبیوں جتنی لگیں گی. آپ بھی اپنے آپ کو اس لیول سے اوپر اٹھا لیں. بڑے مسائل چھوٹے ہونے لگیں گے، بس فوکس بدلنے کی بات ہے. بدلہ نہ لیں کہ معاف کر دینا ہی افضل یے. احسان کے درجے پر رہیں. دعا کرتے رہیں، مسائل کی طرف دیکھنے کا زاویہ بدلیں اور زندگی کی خوشیوں کو جیئیں. ❤

Comments

نیر تاباں

نیر تاباں

نیّر تاباں ایک سلجھی ہوئی کالم نگار ہیں - ان کے مضامین دعوتِ فکر و احتساب دیتے ہیں- بچّوں کی نفسیات اور خواتین کے متعلق ان موضوعات پر جن پہ مرد قلمکاروں کی گرفت کمزور ہو، نیّر انھیں بہت عمدگی سے پیش کرسکتی ہیں- معاشرتی اصلاح براستہ مذہب ان کی تحریر کا نمایاں جز ہے

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.