قومیتوں کی خاصیتیں، مسائل، حل، ایک مشاہدہ - خوشحال خان خٹک

آج آپ سے اپنا ایک مشاہدہ شیئر کر رہا ہوں۔ امید ہے کہ آپ میری اصلاح کے لیے اپنی قیمتی معلومات اور حقائق سے نوازیں گے۔ اس مشاہدے کا مقصد کسی قوم کو اچھا یا برا ثابت کرنا نہیں، بلکہ آخر میں دیے گئے اصل مشاہدے کو اس چھوٹی بحث کے تناظر میں آپ تک پہنچانا ہے۔ وہی اصل مقصد ہے۔

انگریزوں نے ہندوستان میں اپنے 150 سال کے قیام کے دوران اپنے مشاہدات کو قلمبند کیا اور مختلف اشکال میں ان کی تصانیف کو آج بھی ایک مستند حیثیت حاصل ہے۔ انہوں نے زیادہ تر یہاں کی اقوام، اور جغرافیہ پر تحریریں شائع کیں۔ میری خوش قسمتی رہی کہ چھوٹی عمر سے اپنے گھر کی لائبریری میں یہ کتابیں موجود ہونے کی وجہ سے وقت بے وقت پڑھتا۔ اس کی بنیادی وجہ شاید میری وہ نالائقی تھی جو نصاب کی کتب سے مجھے دور رکھتی۔ خیر، عمر اور سفر کے ساتھ انگریزوں اور دوسری اقوام کے مشاہدات کو صحیح اور غلط کے پیرائے میں ڈالتا گیا۔ میں صرف ان اقوام کے بارے میں اپنے صرف ایک مشاہدے کو، محصول معلومات کی روشنی میں، گوش گزار کرتا ہوں۔

مشاہدہ:
برصغیر میں اقوام کو سندھی، بلوچی، پشتون، پنجابی، کشمیری، کوہستانی، سرائیکی، بلتی وغیرہ (موجودہ پاکستان والی بڑی اقوام) میں دیکھا جائے (صرف اس مشاہدے کی خاطر)۔
میرا مشاہدہ بہت سیدھا اور غیر جانبدارانہ ہے۔ اس میں کسی کی ناراضگی مقصود نہیں۔ اس لیے، پیشگی معذرت قبول فرمائیں۔ اس کے علاوہ، پنجابی اور سرائیکی کی تقسیم بھی محض تاریخی ہے، جغرافیائی نہیں۔ ہم اکثر ان اقوام کو جانچنے اور ان سے communicate کرنے میں سنگین غلطیاں کر جاتے ہیں۔

مثال کے طور پر، پشتون، سرائیکی اور بلوچ individuality, hospitality اور personalised relationship کو بہت اہم سمجھتے ہیں، اور اس کی بہت قدر کرتے ہیں۔

ان میں بلوچ صرف ایسی قوم ہے جو اپنے ڈیرے میں زیادہ تر اپنے ہی قوم کے لوگوں کے ساتھ ایک اچھی زندگی گزارنے کو ترجیح دیتا ہے۔ اسے اپنی جائیداد میں مداخلت زیادہ پسند نہیں۔ وہ سخت جان ہے اور اپنی جائیداد کو خود ہی manage کرنا چاہتا ہے۔
سندھی کو اپنی زبان، مٹی اور آبیاری بہت پیاری ہے۔ وہ اپنی زندگی اپنی زمینوں پر گزارنے کو اپنی خیر و عافیت سمجھتا ہے۔
پنجابی کو زمین، پانی اور کسب سے پیار ہے۔ اس کی خوشی اس کی باتوں اور اناج میں ہے۔
کشمیری اور بلتی مطمئن مزاج لوگ ہیں۔ چترالی قوم کو بھی انھی کے ساتھ شامل کیا جا سکتا ہے، مزاج کے لحاظ سے۔ انہیں مہمان کی آمد بہت اچھی لگتی ہے۔
سرائیکی قوم بلوچ، پشتون اور سندھی کی خصوصیات سمیٹے ہوئے ہے۔ ان کے مزاج میں تیزی ہے اور تعلق بنانے میں ان کو وقت درکار ہوتا ہے۔ یہ شاید سب سے زیادہ observant قوم ہیں۔
کوہستانی خود کو باقی اقوام سے دور رکھ کر خوش رہتے ہیں۔ یہ بھی بلوچوں کی طرح اپنی زمین پر خارجی لوگوں کو پسند نہیں کرتے۔ بہت سخت جان اور محنتی واقع ہوئے ہیں۔ اگر تعلق بنے تو خوب نبھاتے ہیں۔
پشتون کو بے شک اپنی مٹی پیاری لگتی ہے مگر اس کی سب سے بڑی کمزوری یا خواہش معاش ہے۔ اس کے لیے یہ سفر کو بہت اچھا سمجھتا ہے اور گھبراتا نہیں۔

اگر مجھ سے کوئی پوچھے کہ یہ اقوام کیا چاہتی ہیں تو میں اپنی reading اور observation کو مد نظر رکھتے ہوئے یہ کہوں گا:
پشتون کو معاش، سرائیکی/بلوچ کو عزت اور معاش، سندھی کو زمین اور پانی، پنجابی کو کسب، زمین اور خوشی، بلتی/چترالی/کشمیری کو امن چاہیے۔ ”عزت“ کو غلط نہ سمجھا جائے، یعنی کہ عزت صرف بلوچ کی ضرورت ہے یا خاصیت، بلکہ یہ وہ overwhelming چیز یا صفت ہے جس کو بلوچ شاید زندگی سے زیادہ اہمیت دیتا ہو۔

یہ تو میرا ان اقوام کے بارے میں کم علم مشاہدہ ہے، جو شاید درست نہ ہو، لیکن اس مشاہدے کا ایک خاص مقصد بھی ہے۔ اگر دو چیزوں کو ان اقوام میں عام کیا جائے تو ان کی ترجیحات کو تبدیل کیا جا سکتا ہے:
1۔ مواصلات یا communications.
2. تعلیم۔
بقول ایک دانشور کے:
The powerful culture shall overpower the weaker culture.

میری ذاتی رائے میں تعلیم اور مواصلات ہی وہ نئے دور کا ”powerful culture“ ہیں۔ جو چیز ہم نے اس بحث میں بیان نہیں کی وہ نہایت اہم ہے۔ تاریخ! وقت کے ساتھ ساتھ ان اقوام کی عادات و اطوار میں کافی تبدیلیاں واقع ہوئی ہیں۔

اب اگر مواصلات اور تعلیم کو ان تک یکساں پہنچایا جائے تو شعور بھی یکساں ہو جائےگا وقت کے ساتھ ساتھ۔ یوں، یہ لسانی طبقات میں منقسم اقوام شاید بہت بہتر انداز سے باہمی روابط کے ذریعے یکجان ہو کر اس جغرافیائی حقیقت کو بہتر انداز میں administer اور manage کر سکیں۔

Comments

خوشحال خان خٹک

خوشحال خان خٹک

خوشحال خان خٹک پشاور اور قبائلی علاقوں کے مسائل پر نظر رکھتے ہیں۔ سیکیورٹی اور عوامی مسائل پر ان کی خاص توجہ ہوتی ہے۔ پاکستان اور ایک عالمی لیول پر تھنک ٹینک کے ممبر بھی ہیں۔

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */