قومی اسمبلی کے اجلاس میں اپوزیشن کی ہنگامہ آرائی، ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ دیں

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کی تقریر کے دوران اپوزیشن نے شدید ہنگامہ آرائی کی اور اس دوران ایوان مچھلی بازار کا منظر پیش کرنے لگا۔\r\n\r\nقومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر ایاز صادق کی سربراہی میں میں ہوا جس میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کے اظہار خیال کےبعد جب حکومتی بینچ سے وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق جواب دینے کھڑے ہوئے تو اس دوران تحریک انصاف نے بھی بات کرنے کی اجازت مانگی تاہم اسپیکر نے پی ٹی آئی کے ارکان کو بات کرنے سے روکا جس کے بعد تحریک انصاف کے ارکان نے شدید احتجاج کیا اور ایوان میں نعرے بازی کی۔\r\n\r\nتحریک انصاف کے احتجاج کے دوران اسپیکر قومی اسمبلی اراکین کو خاموش کراتے رہے تاہم پی ٹی آئی ارکان نے شدید نعرے بازی کی جس سے ایوان میں کان پڑی آواز سنائی نہیں دی۔ ایوان میں بات کرنے کی اجازت نہ ملنے پر اپوزیشن نے اسمبلی کے ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ کر اسپیکر ڈائس کے سامنے پھینک دیں اور اسپیکر ڈائس کا گھیراؤ کرکے نعرے بازی کی۔ ایوان میں اپوزیشن اراکین نے وزیراعظم جب کہ حکومتی اراکین نے عمران خان کے خلاف نعرے بازی کی۔\r\n\r\nخواجہ سعد رفیق نے اپوزیشن کی ہنگامہ آرائی کو غنڈہ گردی قرار دیتے ہوئے کہا کہ انہیں جمہوریت کی الف ب کا بھی نہیں پتا، تحریک انصاف والے صرف اپنی تنخواہیں سیدھی کرنے ایوان میں آئے ہیں۔\r\n\r\nاپوزیشن کی شدید ہنگامہ آرائی کے بعد اسپیکر قومی اسمبلی نے ایوان کی کارروائی کو 15 منٹ کے لیے ملتوی کیا جس کے بعد اجلاس دوبارہ شروع ہوا تاہم صورتحال معمول پر نہ آنے کے بعد اسپیکر نے اجلاس کل شام 4 بجے تک ملتوی کردیا۔\r\n