وہ میرا نبی! از قاضی حارث

وہ تیئیس سال کے مختصر عرصہ میں دنیا کو تبدیل کردینے والا\r\nوہ فقر کو اختیار کرکے فقیروں کو غنی کرنے والا\r\nوہ راتوں کو اُٹھ کر میرے اور آپ کیلیئے رونے والا\r\nوہ سینکڑوں سال پہلے ہماری بخشش کیلیئے خدا سے گھنٹوں دعائیں مانگنے والا\r\nوہ نماز میں کھڑے کھڑے پاؤں سُجا لینے والا\r\nوہ ہنس کر روشنیاں بکھیرنے والا\r\nوہ رو کر غم کو اپنے سینے میں سما لینے والا\r\nوہ امت کے غم میں ہلکان ہوجانے والا\r\nوہ چڑیا کے بچوں کو دیکھ کر بےقرار ہونے والا\r\nوہ آنکھوں سے انسان کو مسحور کردینے والا\r\nوہ امام الانبیاء\r\nوہ خاتم الرسل\r\nوہ دنیا کا سب سے بڑا لیڈر\r\nوہ دنیا کا سب سے عظیم استاد\r\nوہ دنیا کا کامیاب ترین حکمران\r\nوہ دنیا کا زیرک ترین سیاستدان\r\nوہ بے مثال شوہر\r\nوہ باکمال باپ\r\nوہ قابل فخر نانا\r\nوہ پیرِ کامل\r\nوہ جس کی محبت مری رگ رگ میں شامل\r\nوہ چلے تو فاصلے سمٹ کر معراج بن جائیں\r\nوہ رکے تو زمانہ سانس لینا بھول جائے\r\nوہ قدرت پا لینے کے بعد غلاف کعبہ پکڑ کر جانی دشمنوں کو معاف کرنے والا\r\nوہ پتھر کھا کھا کر دعائیں دینے والا\r\nوہ بادشاہ ہو کر بھی عامی کی زندگی گزارنے والا\r\nوہ قاسم ہو کر بھی پیٹ پر پتھر باندھنے والا\r\nوہ چاند کے دو ٹکڑے کرنے والا\r\nوہ ٹوٹے دلوں کو جوڑنے والا\r\nوہ یتیموں کے سر پر ہاتھ رکھنے والا\r\nوہ بن ماں باپ کے بچے کو اپنا بچہ بنا لینے والا\r\nوہ دشمنوں کو زیر کرنے والا\r\nوہ پیار کرنے والا\r\nوہ شافع میرا آخری سہارا\r\nوہ میری آخری امید\r\nمیری منزل\r\nمیرا پیار\r\nمیری جان، میرا مال، میرا لہو، میرے ماں باپ، میری زندگی اس پر قربان\r\nوہ جس کی تعریف ممکن نہیں\r\nوہ جس کی توصیف کی ہمت نہیں\r\nمیرا نبی\r\nمیرا فخر\r\nسرور کونین\r\nوجہِ کائنات\r\nمحمد مصطفیٰ\r\nصلی اللہ علیہ وسلم\r\n\r\nلا یمکن الثناء کما کان حقہ\r\nبعد از خدا بزرگ توئی قصہ مختصر\r\nاز\r\nقاضی حارث