ٹرمپ اپنی غیرمعمولی صلاحیت سے مسئلہ کشمیر حل کرسکتے ہیں، نومنتخب نائب امریکی صدر

نیویارک: نومنتخب نائب امریکی صدر مائیک پینس کا کہنا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ اپنی سودے بازی کی غیرمعمولی صلاحیت کی وجہ سے مسئلہ کشمیر حل کرسکتے ہیں۔\r\n\r\nامریکی ٹی وی این بی سی کے پروگرام ”میٹ دی پریس“ میں گفتگو کرتے ہوئے مائیک پینس کا کہنا تھا کہ نومنتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنی غیرمعمولی سودے بازی کی مہارت کی بدولت دنیا میں موجود تنازعات اور خاص طور پر مسئلہ کشمیر سمیت تمام مسائل حل کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں جب کہ نئی امریکی انتظامیہ جنوبی ایشیا میں مکمل طور پر اپنی توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے اور خاص طور پر خطے میں امن اور سیکیورٹی کے لئے بھارت اور پاکستان سے بات کرنے کے لئے تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان مسئلہ کشمیر کی وجہ سے کشیدگی ہے جب کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے پاکستانی وزیراعظم نواز شریف سے فون پر بات کی اور نواز شریف نے مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے انہیں ثالث کا کردارادا کرنے کی بھی پیش کش کی۔\r\n\r\nپاکستان اور بھارت کے درمیان حالیہ کشیدگی پر مائیک پینس کا کہنا تھا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی کے نتیجے میں کشمیرمیں تشدد میں اضافہ ہورہا ہے جب کہ دونوں سربراہان مملکت سے بات کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے خواہش کا اظہار کیا تھا کہ امریکا دونوں ممالک کے درمیان تعمیری تعلقات کی بحالی کے لئے اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔\r\n\r\nنائب امریکی صدرنے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ اب تک 50 ممالک کے سربراہان سے فون پر بات کرچکے ہیں اور ان کے درمیان ہونے والی بات چیت ذاتی ہے جس میں انہیں مبارکبادیں دی جارہی ہیں جب کہ نئے امریکی صدر کو اس بات کی اجازت ہے کہ وہ دنیا بھر میں موجود امریکی مفادات کا تحفظ کریں۔ انہوں نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ سب سے پہلے امریکا میں موجود امریکی مفادات کا تحفظ چاہتے ہیں جس میں معیشت کی بحالی اور امریکی نوجوانوں کی ملازمتوں کے مسئلے کا حل شامل ہے۔\r\n\r\nمائیک پینس سے جب سوال کیا گیا کہ کیا ٹرمپ کی نئی ٹیم محکمہ خارجہ و دفاع سمیت انتقال اقتدار کی دیگر ٹیموں سے مشورہ لیں گی جس پر پینس کا کہنا تھا کہ وہ اور ڈونلڈ ٹرمپ روزانہ کی بنیاد پر صدارتی بریفنگ لے رہے ہیں جب کہ انہیں قومی سلامتی پر بھی بریفنگ دی جارہی ہے۔\r\n

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */