سپریم کورٹ میں پاناما لیکس کیس کی سماعت آج پھر ہوگی

اسلام آباد: سپریم كورٹ میں پاناما لیكس كی تحقیقات كے لیے دائر درخواستوں كی سماعت آج ہوگی جب کہ وزیراعظم کے صاحبزادے حسین نواز نے لندن پارک لین فلیٹس کی ملکیت سے متعلق ریکارڈ عدالت میں جمع کرادیا۔\r\nچیف جسٹس انور ظہیر جمالی كی سربراہی میں جسٹس آصف سعید كھوسہ، جسٹس امیرہانی مسلم، جسٹس شیخ عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الاحسن پر مشتمل پانچ ركنی بنچ چیرمین تحریك انصاف عمران خان، امیر جماعت اسلامی پاكستان سراج الحق، سربراہ عوامی مسلم لیگ شیخ رشید احمد اور طارق اسد ایڈووكیٹ كی طرف سے دائر كردہ درخواستوں كی آٹھویں سماعت كرے گا،دوران سماعت عمران خان كے وكیل نعیم بخاری اپنے دلائل مكمل كریں گے۔\r\nجماعت اسلامی كی طرف سے اس كیس میں متفرق درخواست بھی دائر كی گئی ہے جس میں عدالت سے درخواست كی گئی ہے كہ عدالت اس كیس میں مزید دلائل سننے كے بجائے عدالتی كمیشن قائم كرے اور متعلقہ تحقیقاتی اداروں نیب یا ایف آئی اے سے معاملے كی مكمل چھان بین كرائی جائے۔\r\nدوسری جانب وزیراعظم نوازشریف کے صاحبزادے حسین نوازنے لندن پارک لین فلیٹس کی ملکیت سے متعلق ریکارڈ سپریم کورٹ میں جمع کرادیا۔ حسین نوازکے وکیل اکرم شیخ نے ایک اضافی درخواست کے ذریعے چاروں فلیٹس کی خریداری سے متعلق ریکارڈ سپریم کورٹ میں جمع کرادیا جس میں بتایا گیا ہے کہ نیسکول کمپنی نے فلیٹ ون سیون 1993 میں 5 لاکھ 85 ہزار پاؤنڈ میں خریدا اور نیلسن کمپنی نے فلیٹ 16 اور 16 اے 10 جولائی 1995 کو 10 لاکھ 75 ہزار پاؤنڈز میں خریدا جب کہ نیسکول کمپنی نے فلیٹ 17 اے 5 جولائی 1996 کو 2 لاکھ 45 ہزار پاؤنڈ میں خریدا اور چاروں اپارٹمنٹس 19 لاکھ 5 ہزار پاؤنڈز میں خریدے گئے۔\r\nریکارڈ میں بتایا گیا ہےکہ جس وقت فلیٹ خریدے گئے اس وقت نیلسن اور نیسکول کمپنیاں الثانی خاندان کی ملکیت تھیں، درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ فلیٹس کی خریداری سے متعلق دستاویزات کو عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنایا جائے کیونکہ دستاویزات کو ریکارڈ پر لانے سے انصاف ہوسکے گا۔\r\nادھر چیرمین پاكستان تحریك انصاف عمران خان نے پارٹی كے مركزی سیكرٹری جنرل جہانگیرخان ترین كے ہمراہ پانامالیكس كیس میں پارٹی كی قانونی ٹیم سے ملاقات كی جس میں قانونی ٹیم كے سربراہ نعیم بخاری، ملائكہ بخاری اورسكندر مہمند بھی موجود تھے ۔اس موقع پر آج سپریم كورٹ میں پانامالیكس كیس كی سماعت كے حوالے سے مختلف امور پر تبادلہ خیال كیاگیا جب کہ كیس كے سلسلے میں نئے شواہد اور دستاویزكا بھی جائزہ لیا گیا۔\r\n

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */