زہے مقدر حضور حق سے سلام آیا - سعدیہ نعمان

ادب پہلا قرینہ ہے محبت کے قرینوں میں۔ یہ قرینہ مسجد نبوی ﷺ میں روضہ رسول ﷺ پر حاضری کے وقت عام طور پہ جذبات کی نظر ہو جاتا ہے۔ گائیڈ خواتین سمجھاتی رہ جاتی ہیں مگر بہت کم خواتین ان کی سنتی ہیں، ایسی دھکم پیل کہ بجائے کوئی التجا کرنے کے، شرم سی محسوس ہو نے لگتی ہے کہ کیا مقام ہے اور ہم بحیثیت قوم افراتفری کا شکار ہو کے اس کی عظمت کو فراموش کر رہے ہیں. کئی لوگ ریاض الجنہ میں نفل پڑھنے سے محروم رہ جاتے ہیں کیونکہ بیماری یا مرض کے باعث دھکم پیل برداشت نہیں کر پاتے۔\n\nحج کے لیے روانگی شروع ہو چکی ہے۔ براہ راست مدینہ جانے والے حضرات و خواتین کے شوق کا کیا عالم ہو گا۔ لیکن کچھ باتوں کا خیال بہت ضروری ہے۔ مسجد نبویﷺ کے احاطے میں داخلے کے بعد حاضری اور ریاض الجنتہ میں نفل پڑھنے کی سعادت حاصل کرنے کے لیے ہر کوئی کشاں کشاں اندر کی جانب لپکتا ہے۔ خواتین کی جانب ہال میں داخلے کے وقت کیمرہ والے فون باہر ہی رکھ جانے کی ہدایت کی جاتی ہے اور اندر بھی بار بار تاکید کی جاتی ہے کہ مسجد کی یا مسجد کے اندر اپنی یا کسی اور کی تصاویر مت لیں،\nاس ہدایت کو نظر انداز نہ کریں۔ سوچیے کتنی طلب اور مشقت کے بعد اس مقام پر پہنچے ہیں تو ذرا سی بے احتیاطی ہمارے اخلاص اور للہیت میں کمی کا سبب نہ بن جائے۔ تصاویر اندر جا کر بالخصوص روضہ رسولﷺ پہ بالکل نہ اتاریں۔ بہت سوز دل سے بعض دفعہ کچھ بہنوں کو اس طرف متوجہ کیا لیکن افسوس کہ ردعمل اچھا نہ ملا۔ دلی رنج ہوا، کیسا یہ مقام ہے؟ کیسی وہ ہستی ہے؟ اور کیسا ہمارا عمل ہے؟\n\nکوشش کریں کہ انتظار میں بیٹھی ہیں تو درودشریف سے زبان تر رہے۔ کوئی فالتو بات غیبت یا مذاق نہ ہو۔ گناہوں پہ رویا جائے۔ عاجزی سے نظریں جھکا لی جائیں، سوچیے کہ کیسے جا کے سلام عرض کرنا ہے۔ ہر عضو کو سجدہ ریز کیجیے، ایسے کہ نگہ اٹھانے کی ہمت نہ ہو، گناہوں کی پوٹلیاں لیے شرمساری کے عالم میں سر جھکے ہوئے ہوں، پاؤں جیسے زمیں سے جکڑ ے جاتے ہوں۔ صحابہ کرام رض آپ ﷺ کی مجلس میں یوں بیٹھتے تھے کہ گویا پرندے ان کے بازوؤں اور کا ندھے پہ بیٹھے ہوں اور ذرا سی جنبش سے ان کے اڑنے کا ڈر ہو۔ کہاں وہ عالم اور کہاں یہ شور شرابہ، ہنگامہ، چیخیں، دھکے، کیمرے، موویز، فلیش لائٹس اور جالیوں تک پہنچنے کی دوڑیں۔ کیا یہ سب پیارے نبیﷺ کی شان اقدس کے خلاف نہیں، ہمیں ان ہستیوں سے محبت کا دعوی ہے تو بس یاد ر کھیے\nادب پہلا قر ینہ ہے محبت کے قرینوں میں۔ \nاور \nجھکاؤ نظریں، بچھاؤ پلکیں، ادب کا اعلیٰ مقام آیا۔\n\nآپ سب کو یہ سعید سفر مبارک ہو، اپنی دعاؤں میں یاد رکھیے گا۔

Comments

سعدیہ نعمان

سعدیہ نعمان

سعدیہ نعمان سعودی عرب میں مقیم ہیں، بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی ملتان سے ابلاغ عامہ میں ماسٹر کیا، طالبات کے نمائندہ رسالہ ماہنامہ پکار ملت کی سابقہ مدیرہ اور ایک پاکیزہ معاشرے کے قیام کے لیے کوشاں خواتین کی ملک گیر اصلاحی و ادبی انجمن حریم ادب کی ممبر ہیں

تبصرہ کرنے کے لیے کلک کریں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WP2Social Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
/* ]]> */