شب کا مسافر – سخاوت حسین

شام کے سائے گہرے ہو چکے تھے۔ شفق پر سورج کی سرخ لکیر الوداع ہوتے مسافر کے آخری سلام کی طرح دور پردہ افق سے الوداعی سلام کہہ رہی تھی۔ لاہور کی سڑکوں پر اسی طرح گہما گہمی تھی۔ چنگ چی رکشے اپنے سفر پر رواں دواں تھے۔ بازاروں میں لوگوں کا ہجوم تھا۔ مجھے مزید پڑھیں

ماں تجھے سلام – عابد محمود عزام

گرمیوں کی ایک دوپہر بچہ اسکول سے گھر لوٹا۔ ماں بچے کو دیکھ کر مسکرائی اور اس کے گال پر بوسہ دیتے ہوئے کہا بیٹا! جلدی سے کپڑے بدل لو، میں کھانا لاتی ہوں، میرے بیٹے کو بھوک لگی ہوگی۔ بیٹا جلدی سے کپڑے بدل کر آیا تو سامنے ہر روز کی طرح سبزی یا مزید پڑھیں

اب محبت جس سے بھی ہوگی – نصرت یوسف

’’چھوٹا ذہن یا محدود ذہنیت انسانوں پرگفتگو کرتی ہے، اوسط درجہ کی ذہنیت واقعات پر بات چیت کرتی ہے اور تخلیقی ذہن نت نئے تصورات پر اڑان بھرتاہے.‘‘ سندیلہ انعم کے ذہن میں یہ فلسفہ ہمیشہ ہی زندہ رہتا۔ وہ ہمیشہ اپنے آپ کو تخلیقی ہی رکھنا چاہتی، محدودیت اور عمومیت کے درجہ پر آ مزید پڑھیں

محبت کا مقدمہ – سخاوت حسین

بعض لوگ زندگی کی کتاب میں مقدمے کی سی اہمیت رکھتے ہیں۔ جب تک وہ ہماری زندگی میں موجود رہتے ہیں، لگتا ہے چاہتوں کا سورج بھی اپنی کرنوں سمیت ہمارے وجود میں محبت کی کرنوں سے دل کی دھرتی کو نکھار رہا ہے۔ نانا، آپ میرے لیے کتنی اہمیت کے حامل تھے یہ میں مزید پڑھیں

رین رنگ سہاگ سنگ (آخری قسط) – سائرہ ممتاز

اسے کچھ سمجھ. نہ آئی کہ سنیاسی جی نے کیا کہا ہے. وہ کچھ پل ان کی طرف یونہی دیکھتا رہا.. ’’مہاراج! آپ کی نراشا کا سبب دور ہو چکا، بال گوپال نے وہ کنہیا بھیج دی تھی جو آپ کے پیچھے کھڑی کرشن کی بنسی سنتی رہی، وہ آپ کے آس پاس ہی رہتی مزید پڑھیں

اٹھو نا! مجھے تمہاری ضرورت ہے (2) – اسری غوری

آپ کو معدے کا کینسر ہے مسز شازینہ! آپ کو بتانا اس لیے ضروری ہے کہ آپ کے ساتھ کبھی کوئی نہیں آتا، آپ ہمیشہ اکیلی ہی آئیں، اس لیے مجبورا آپ کو بتانا پڑ رہا ہے. آپ پڑھی لکھی سمجھدار ہیں ورنہ ہم ایسی نیوز مریض کو کم ہی بتاتے ہیں، ہم اسے معدے مزید پڑھیں

رین رنگ سہاگ سنگ (3) – سائرہ ممتاز

نرملا… ارے او نرملا… بھابھو آواز دیتی آ رہی تھیں، ’’کہاں رہ گئی ہو، پانی رکھ دیا مہمان کے کمرے میں.‘‘ وہ جلدی سے پیچھے ہٹی، سینہ دھوکنی ہو گیا تھا، آنکھیں غزال کا ویرانہ، ’’نہیں بھابھو، میں چادریں ڈال ہی رہی تھی کہ بھیا جی آ گئے، ابھی رکھ دیتی ہوں.‘‘ نرملا بھاگ کر مزید پڑھیں

اٹھو نا! مجھے تمہاری ضرورت ہے – اسری غوری

وہ ایمرجنسی وارڈ میں میرے سامنے والے بیڈ پر ہوش و حواس سے بلکل بیگانہ تھی، ساتھ جو اٹینڈنٹ تھا، وہ مستقل بے جان ہاتھوں کو اپنے ہاتھ میں دبائے تھوڑی تھوڑی دیر بعد اس کے کان کے پاس جا کر کہتا ’’اٹھو نا! مجھے تمہاری ضرورت ہے.‘‘ اس کے لہجے میں موجود درد اور مزید پڑھیں

بٹ خیلے کا ندیم ولی – زارا مظہر

کیت کیت کیت ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ بھور سمے ریشم جاناں کی کانوں کو چھیدتی آواز سارے نئے نویلے جوڑوں کے لیے اذّیت اور نیند میں خلل کا باعث بن جاتی مگر اسے مطلق پرواہ نہ ہوتی۔ دونوں لائنوں کے گھروں سے اکٹھی کی گئی روٹیاں وہ رات پانی میں بھگو دیتی اور مزید پڑھیں

رین رنگ سہاگ سنگ (2) – سائرہ ممتاز

اس رجل سفید پوش،گھڑ سوار نے پشکر میں داخل ہوتے سمے تین ناریوں کو درختوں کے جھنڈ میں سڑک پر کھڑے دیکھا اور سوچنے لگا کہ یہ لڑکیاں یہاں کھڑی کیا کر رہی ہیں، اس کے دماغ میں پہلا خیال یہی آیا کہ شاید کسی آوارہ کتے کے پیچھے پڑنے کے باعث اس سنسان سڑک مزید پڑھیں