فیصلہ - نصرت یوسف

آسمان کو چھوتے درختوں کے پتے گرد آلود تھے۔ تازگی کی ان میں رمق بھی نہ تھی۔ ایسے جیسے بستی والوں کے رجحانات افق کے بجائے زمین کی جانب مائل تھے، ایسے ہی ناریل کے ان بلند درختوں کے پتوں کا رخ تھا۔ جھکا ہوا ، جالوں سے بھرا، سیاہی زدہ۔ دسمبر کی سہ پہر تھی، سنہری دھوپ کی نرم ملائم رضائی ہر شے کو بوسہ دے...