طلاق کا بڑھتا رحجان – سحر فاروق

ایک اخبار میں سٹی کورٹ کی تصویر کے ساتھ یہ کیپشن درج دیکھا کہ سٹی کورٹ میں طلاق کے رجسٹرڈ کیسسز کی تعداد دس ہزار تک پہنچ گئی ہے، یہ پڑھ کر دل پر منوں وزنی بوجھ محسوس ہوا کہ اف خدایا یہ ہمارا معاشرہ کس نہج پر گامزن ہوگیا ہے کہ خدا کو مبغوض مزید پڑھیں

مداری، بازاری اور گالم نویسی – منصور اصغر راجہ

دو تین سال پہلے جب عامر لیاقت کی لائیو رمضان ٹرانسمشن نامی ڈرامے بازی پر ’’امت‘‘ نے پہلی بار چڑھائی کی اور ڈاکٹر ضیاالدین خان صاحب نے موصوف کے بارے میں ’’مداری‘‘ کے عنوان سے دھواں دار کالم تین یا چار قسطوں میں لکھا تو کچھ عرصہ ’’جنگ‘‘میں کام کرنے والے عامر لیاقت کے مزاج مزید پڑھیں

نظر تیری بری، پردہ میں کروں؟ مدیحی عدن

زندگی میں کچھ جملے انسان کو حیران کردیتے ہیں، یہ جملے ایسی کشمکش میں مبتلا کردیتے ہیں کہ فیصلہ کرنا مشکل ہوجاتا ہے کہ بات صحیح کی جا رہی ہے یا غلط یا پھر ہوسکتا ہے کہ میری سوچ اور رائے ہی غلط ہو، اور پھر وہ اپنی سوچ پر نظرثانی کرتا ہے، کچھ ایسی مزید پڑھیں

مراد علی شاہ صاحب! آئیں بھنگ پیتے ہیں – عمیر محمود

ارے مراد علی شاہ صاحب۔ آپ تو سنجیدہ ہی ہو گئے۔ یہ وزیراعلیٰ بنتے ہی عوامی خدمت کا نعرہ لگانے کی کیا ضرورت تھی؟ آپ کو عوام سے ایک ہی چیز تو چاہیے ہوتی ہے، ووٹ۔ وہ خدمت کیے بغیر بھی مل رہے ہیں۔ جب آپ کو وزیراعلیٰ بنانے کا اعلان کیا گیا، اس وقت مزید پڑھیں

ٹوپی ڈرامہ – عاطف الیاس

ٹوپی ڈرامہ آج بھی جاری ہے۔ کردار ، کہانی، پلاٹ، ڈائیلاگ سب کچھ وہی ہے، کچھ بھی تو نہیں بدلا۔ ہاں ایک نسل کے خواب تیسری نسل کو منقل ہوچکے ہیں۔ یہ خواب کچھ نئے ہیں، کچھ پرانے اور کچھ تو ازل سے انسان کے ساتھ ہیں۔ لیکن ہماری اشرافیہ میں ایک قدر مشترک ہے مزید پڑھیں

شادی ایک اہم فیصلہ، کیسے کریں؟ زمان خالد

زندگی میں دو فیصلے بڑے اہم ہوتے ہیں، ایک کون سا پیشہ اپنایا جائے، دوسرا شادی کس سے کی جائے. دونوں فیصلوں کا اثر طویل مدت کا ہوتا ہے اور پوری زندگی پر اثرانداز ہوتا ہے۔ پیشے کا فیصلہ اہم تو ہے لیکن اس معاملے میں غلطی کی اصلاح کی گنجائش موجود رہتی ہے، پیشے مزید پڑھیں

جواب حاضر ہے – اسری غوری

سوال تو اٹھتے ہی جواب کے لیے ہیں. میری اک تحریر ”ماما آپ کو ہم پر اعتبار نہیں“ پر محترم بھائی ہمایوں مجاہد تارڑ نے “بہن اسرٰی غوری سے ایک سوال” کے عنوان سے تحریر لکھی، اگرچہ اس میں ایک نہیں بہت سے سوالات تھے، مگر ایک دو بنیادی باتوں کا جواب عرض کیے دیتے مزید پڑھیں

جنگل راج – رضی الاسلام ندوی

میں روزانہ اخبار پر ایک نظر ڈال لیتا ہوں. ایک خاص واقعہ سے متعلق کچھ عرصے تک مسلسل اس طرح کی خبریں پڑھنے کو ملیں :\n\n_ غازی آباد (صوبہ اترپردیش) کے ایک قریبی گاؤں میں ایک مشتعل بھیڑ نے ایک گھر میں گھس کر اخلاق نامی آدمی کو پکڑا، گھسیٹتے ہوئے باہر لے گئے اور مزید پڑھیں

آس پاس نظر ڈالیے – زبیر منصوری

آس پاس نظر ڈالیے!\nکوئی ٹوٹ پھوٹ کا شکار انسان تلاش کیجیے ،\nاکثر سفید پوش لوگوں میں ایسے لوگ آپ کو مل جائیں گے جو زندگی کے تھپیڑوں سے دل شکستہ ہوں گے\nدکھی ہوں گے\nافسردہ ہوں گے\nان کے پاس جائیں، انھیں پیار سے اپنے بازئووں کی گرفت میں لے کر اپنے سینے میں سمیٹ لیں،\nبھینچ کر مزید پڑھیں

میڈیا کی جوابدہی کون کرے گا؟ صائمہ اسما

قندیل بلوچ کا قتل ایک افسوسناک واقعہ ہے۔ اس کی پہلی ایف آئی آر پرائیویٹ میڈیا چینلز کے خلاف کٹنی چاہیے جنہوں نے اس کی سستی شہرت کی طلب کافائدہ اٹھایا اور اپنی ریٹنگ بڑھاتے رہے۔ پھر ایک عالم دین کو بدنام اور بلیک میل کرنے کے لیے اسے انتہائی گھٹیا طریقے سے استعمال کیا۔ مزید پڑھیں