تبصرہ نگاری ایک فن – نعیم الدین جمالی

پاکستان کےا ندر دن بدن کتب بینی اور کتاب دوستی زوال پذیر ہو رہی ہے. کچھ وقت نکال کر لوگ مطالعہ کرلیتے تھے، موبائل اور انٹرنیٹ کی بدولت وہ بھی ختم ہونے کے قریب ہے، اسی طرح کتاب کے متعلقات اور علم و ادب کی اصناف بھی ماند پڑتی جا رہی ہیں. ماہرین فنون ہم مزید پڑھیں

سنا ہے لوگ اُسے آنکھ بھر کے دیکھتے ہیں – راشد حسین قاسم

اردو غزل کو نئی جہتوں سے روشناس کرانے والے اور شاعری کی دنیا میں اپنا منفرد مقام بنانے والے احمد فراز 12 جنوری 1931ء کو کوہاٹ میں پیدا ہوئے۔ زندگی بھر ادبی خدمات انجام دینے کے ساتھ رومان انگیز اور انقلاب آمیز شاعری میں نام کمایا۔ ان کی شعری تصانیف میں تن تنہا، جان جاناں، مزید پڑھیں

ٹک روتے روتے- یوسف ثانی

شہنائیوں کی گونج میں دلہن رخصت ہو رہی تھی۔ حسب روایت دلہن سمیت سب ہی کی آنکھیں اشکبار تھیں مگر دلہن کی چھوٹی مگر سیانی بہن نے تو رو رو کر گویا گھر سر پر اٹھا لیا تھا۔ سب ہی اسے چپ کرانے کی کوشش کر رہے تھے کہ ایک خاتون انہیں سمجھاتے ہوئے بولیں مزید پڑھیں

خطوطِ غالبؔ میں شوخی و ظرافت – ڈاکٹر محمد حسین مُشاہدؔ رضوی

اردو ادب میں مرزا غالبؔ کو جاننے اور پہچاننے کا عمومی وسیلہ اُن کی شاعری اورخاص ذریعہ اُن کا منفرد غزلیہ رنگ و آہنگ ہے۔ ویسے غالبؔ کی نثر بھی خاصے کی چیز ہے۔ انہوں نے اپنی شاعری کی طرح نثر میں بھی ایک نئی راہ نکالی ۔ سادہ و پرکاراور حسین و رنگین ،غالبؔ مزید پڑھیں

ایک غیرمعمولی شجرہ نسب – غلام عباس

چھجو: باپ کا نام باوجود تحقیق بسیار معلوم نہ ہو سکا۔ گاؤں میں کبابی کی دکان کرتے تھے۔ شیخ مسیتا: چھجو کے بیٹے، شہر میں پہلے سگریٹ کی دکان تھی، پھر عطاری کرنے لگے۔ حکیم عمردراز: شیخ مسیتا کے بیٹے، ان پڑھ تھے، مگر ساری عمر حکمت کرتے رہے۔ بلا کے زیرک شخص تھے۔ اگر مزید پڑھیں

تو بھی مؤمن میں بھی مؤمن – مبشر اکرام

کفر کا کوئی پرچار کرے لفظوں کا دامن چاک کرے من جب اپنا پرانا پاپی ہو ہر خیر میں شر جو دکھتا ہو ٹھیک غلط کی جنگ میں پھر من موجی اپنی چلتی ہو پھریہ بھی مومن وہ بھی مومن تو بھی مومن میں بھی مومن اللہ سے انکار بھی مومن شریعت سے بیزار بھی مزید پڑھیں

پسماندگان – خواجہ احمد عباس

اس کا نام تو رحیم خان تھا مگر اس جیسا ظالم بھی شاید ہی کوئی ہو۔ گاؤں بھر اس کے نام سے کانپتا تھا۔ نہ آدمی پر ترس کھائے نہ جانور پر۔ ایک دن راہو کہار کے بچے نے اس کے بیل کی دم میں کانٹے باندھ دیے تو مارتے مارتے اس کو ادھ مُوا مزید پڑھیں

بھوک – آصف اقبال

”ابے اس اشارے پر ساری آبادی رک رک کے چلتی اب۔ ایک دفعہ گاڑی قطار میں لگ جائے تو چار دفعہ تو اشارہ بند ہو ہی جاتا۔ اتنی گاڑیوں کی قطار میں تیرے سے پانچ سو روپے اکٹھے نہیں ہوتے۔ بکواس کرتا رہتا ہے میرے ساتھ۔ سیدھی طرح بتا دے پیسے کدھر کرتا ہے تو۔“ مزید پڑھیں

مرنے کے بعد – اشفاق احمد

کسی کو ٹھیک سے معلوم نہیں کہ ماسٹرا لیاس کب اس محلہ میں آیا تھا اور کب اس نے یہ کوٹھڑی کرائے پر لی تھی، لیکن اس بات کا ہر ایک کو علم تھا کہ ماسٹر الیاس مہاجر ہے اور اس کا تعلق انبالے کے کسی علاقے سے ہے، کیونکہ وہ بولی ہی ایسی بولتا مزید پڑھیں

اِرادے، نئے یا پرانے؟ دلچسپ کہانی – حنا نرجس

پتہ نہیں وقت نے اپنی پہلی اڑان کب بھری ہوگی مگر یہ طے ہے کہ تب سے اب تک مسلسل پر پھیلائے اُڑے ہی چلا جا رہا ہے. نادیہ کو اپنے آج کے کام کل پر ڈالنے کی عادت تو نہیں تھی مگر دیر سویر ہو ہی جاتی ہے. لکھنے پڑھنے کی میز کے درازوں مزید پڑھیں