خاموش شامیں ! – فاروق حیدر

ہم ایک شام کھیل رہے تھے کہ کسی نے معاً پکارا ۔ پلٹ کر دیکھا تو ابو جان کھڑے تھے ۔ ان کے چہرے پہپھیلی پریشانی دیکھ کر کچھ تعجب سا ہوا ۔ اگلے ہی لمحے۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ایک کار ہمارے گھر کے سامنے آ کر رکی۔ سفید رنگت کی کار۔ ۔ ۔ مزید پڑھیں

تاریخی فکشن: ادب کی صنف یا دشمن کو بدنام کرنے کا ہتھیار – تزئین حسن

تاریخ عموماً خشک مضمون ہوتا ہے لیکن اسے فکشن یا فلم کی صورت متعارف کرایا جائے تو یہ عام آدمی کے لیے دلچسپی کا باعث ہو جاتا ہے۔ اسی حوالے سے فی الوقت ادب کی ایک صنف دنیا میں بہت مقبول ہے جسے ’ہسٹوریکل فکشن‘ کہا جاتا ہے۔ اس میں تاریخی واقعات، مقامات اور کرداروں مزید پڑھیں

پردہ- امبر اشفاق

“اماں مجھے ہر وقت مجبور نہ کیا کریں۔ میری دوستیں سر پہ دوپٹہ بھی نہیں لیتیں، میں تو سکارف پہن کر جاتی ہوں۔ اس سے زیادہ میرے بس میں نہیں ہے۔ میں نے اس کو بھی اتار دینا ہے۔ لوگوں کی باتیں مجھے سننی پڑتی ہیں۔ اب میں برقعہ کسی صورت نہ ڈالوں گی۔ پردہ مزید پڑھیں

پاگل – تاج رحیم

پارک کے ایک کنارے اس گلی میں صرف تین گھر ہیں۔ ڈاکٹر عبداللہ صاحب کا چار کنال پر ایک عالیشان گھر، اس کے سامنے اللہ یار خان پٹواری مرحوم کی بیوہ کا ایک کنال پر گھر اور جہاں گلی بند ہوتی ہے اس گلی کی چوڑائی پر مولوی عبدالغنی کا دو کمروں پر مشتمل گھر مزید پڑھیں

خواہش – سخاوت حسین

تھوڑی دیر میں ٹرین آنے والی تھی۔ وقت بدلا تھا نہ اس کے حالات۔ گھر پر دو بچے بھوک سے بے تاب ہو کر اس کا انتظار کر رہے تھے۔ غربت کے ہاتھوں تنگ آکر وہ شہر چھوڑ کر قریبی بستی میں آگیا تھا، جہاں ہر طرف غربت ہی غربت نظر آتی تھی۔ اس کے مزید پڑھیں

‘ لا حاصل’ – فرحان سعید خان

ہزار شب کی طویل عمری تمہاری چوکھٹ پہ ہار کر بھی اس ایک لمحے کا قرض شاید کبھی بھی تجھ کو چکا نہ پاؤں جو تیری قربت میں سنگ تیرےبیتا چکا ہوں جو بن کے جوگی تیری تپسیا میں اپنا جیون تیاگ بھی دوں تو جب بھی میری سبھی یہ کاوش فقط لاحاصل۔۔۔ فقط لاحاصل۔۔۔

بیچارہ – اخترعلی تابش

بنگلے کے دروازے پر گاڑی رکتے ہی نوکر سے دوڑ لگائی اور مرکزی دروازہ کھول دیا۔ عابد چودھری نے گاڑی باہر کی بند کردی اور اپنے جان سے پیارے کتے ٹائیگر کے ساتھ باہر نکل آئے۔ نوکر نے سلام کیا اور ٹائیگر کی زنجیر تھام لی۔ عابد چودھری نے دروازے کی طرف قدم بڑھایا ہی مزید پڑھیں

استاد منگو – نوید احمد

استاد منگو اب کوچوان نہیں بلکہ چنگ چی ڈرائیور ہے،اور چنگ چی بھی ایسا جو 69سال 6ماہ اور 6دن کی مسافت طے کر چکا ہے۔ اس دوران منصفوں کی روایتیں اور فیصلوں کی عبارتیں مملکت خداداد میں الفاظ کے گورکھ دھندے سے باہر نہیں نکل سکیں،وہ حقے کی بجائے سگریٹ پیتا ہے،اس کا مفکرانہ انداز مزید پڑھیں

کتابوں کا منتخب کردہ مصنف – سعود عثمانی

”پلو ٹارک کی کتاب میں جابجا ایسے جملے ملتے ہیں جنہیں نقل کرنے اور حاجت مندوں میں تقسیم کرنے کو جی چاہتا ہے۔“ یہ جملہ جناب مختار مسعود نے لکھا تو یونان ِقدیم کے دانشور پلو ٹارک کے بارے میں تھا لیکن یہ بات خود ان پر جس طرح صادق آتی تھی، اس طرح کم مزید پڑھیں

شہید – اخترعلی تابش

ظفر احمد بطور انسپکٹر پولیس میں بھرتی ہوا۔ حلف تو اس نے فرض شناسی کا اٹھایا تھا لیکن اہمیت غرض شناسی کو دی یعنی سیدھے الفاظ میں بلا کا کرپٹ افسر۔ بہت کچھ حاصل کرنے کی ہوس نے صحیح اور غلط کا امتیاز ختم کردیا تھا۔ پھر جس تھانے میں وہ تعینات تھا، وہاں تو مزید پڑھیں